بجلی کے نرخوں میں اضافہ کر کے عوام پر اضافی بوجھ ڈال دیا گیا ہے:سعید غنی

بجلی کے نرخوں میں اضافہ کر کے عوام پر اضافی بوجھ ڈال دیا گیا ہے:سعید غنی

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر) وزیر اطلاعات و محنت سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ موجودہ نااہل اور نالائق حکومت نے صرف چند روز میں بجلی کے نرخوں میں اضافہ کرکے عوام پر 80 ارب روپے کا اضافی بوجھ ڈال دیا گیا ہے۔ پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت سلیکشن کے ذریعے نہیں آئی ہے بلکہ اپنے خلاف سازشوں  کو ناکام بنا کر عوامی ووٹوں سے آئی ہے جبکہ پی ٹی آئی کے ڈبوں کے کھلنے کا سلسلہ ڈپٹی اسپیکر کے ڈبوں سے شروع ہوچکا ہے سندھ حکومت نے سرکولر ریلوے کا ٹریک صاف کرنا شروع کیا تھا اور یہ کام بھی ریلوے انتظامیہ کے کہنے پر ہی اس کو روکا گیا ہے۔ کرپشن جہاں بھی پورے ملک میں ہورہی ہے اس کی قانون کے مطابق کارروائی ہونی چاہیے۔ کراچی میں صفائی مہم اطمینان بخش طور پر چل رہی ہے اور بیک لاک اٹھایا جارہا ہے۔  ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کو سندھ اسمبلی کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ سعید غنی نے کہا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے دو روز کے دوران بجلی کی قیمتوں میں پہلے 53 پیسے اور دوسرے روز 30 پیسے فی یونٹ اضافہ کرکے اس ملک کے عوام پر 80 ارب روپے کا بوجھ ڈال دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس ملک کے عوام کی پہلے ہی مہنگائی کے باعث کمر ٹوٹی ہوئی ہے اور موجودہ حکومت کی نااہلی کے باعث آج عوام ادویات، بجلی، گیس، پیٹرول سمیت تمام روزمرہ کی اشیاء کی قیمتوں میں  اضافے کا بوجھ اٹھانے پر مجبور ہوگئے ہیں۔ سعید غنی نے کہا کہ پنجاب اور کے پی کے میں سرکاری اسپتالوں میں مفت ٹیسٹ اور ادویات کی فراہمی کو بھی بند کرکے وہاں پر مریضوں سے ان ٹیسٹ کی قیمت وصول کی جارہی ہے، جو قابل مذمت عمل ہے اور اس سے عوام اپنے علاج معالجہ سے بھی محروم ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے آکر تاجروں کا کاروبار اور کاشت کاروں کی زراعت کو بھی تباہ کردیا ہے اور عام لوگوں کی زندگی مہنگائی سے اجیرن بنا دی ہے اور بجلی کی قیمتوں میں اضافے سے ملک کا ہر شخص متاثر ہوگا۔ سعید غنی نے کہا کہ ہم جب کہتے رہے کہ ملک کی معاشی حالت انتہاہی ناگزیر ہوچکی ہے تو اس نالائق اور نااہل حکومت کے وزراء اور پی ٹی آئی کے رہنماء اس کو غلط قرار دیتے رہے اور ملکی معشیت مضبوط ہونے کا راگ الاپتے نظر آئے لیکن جب اس ملک کے تاجروں نے اس نااہل وزیر اعظم اور ان کی کابینہ پر عدم اعتماد کرتے ہوئے آرمی چیف سے رجوع کیا اور آرمی چیف نے وزیر خزانہ اور ایف بی آر کو طلب کرکے ان تاجروں کے مسائل کے حل کا کہا ہے تو اس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ  اس ملک کی معشیت کو چلانے والے پہیوں کی کیا حالت ہوچکی ہے۔ سعید غنی نے مزید کہا کہ اس ملک میں عوام کے ساتھ موجودہ حکومت نے جو کچھ کیا ہے اس کے نتائج سب کے سامنے آنا شروع ہوچکیں ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -