’حکومت اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان میچ ہو ہی جاناچاہئے تاکہ ۔۔۔‘ حامد میر نے مشورہ دے دیا

’حکومت اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان میچ ہو ہی جاناچاہئے تاکہ ۔۔۔‘ حامد ...
’حکومت اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان میچ ہو ہی جاناچاہئے تاکہ ۔۔۔‘ حامد میر نے مشورہ دے دیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)تجزیہ کار حامد میر نے کہاہے کہ ریاست مدینہ کی بات کرنے والے مولانا فضل الرحمان پر مذہب کارڈ استعمال کرنے کا الزام لگارہے ہیں، حکومت اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان میچ ہو ہی جاناچاہئے تاکہ دونوں کی سیاسی طاقت کا پتہ چل جائے ۔

جیونیو ز کے پروگرام ”نیا پاکستان “میں گفتگو کرتے ہوئے حامد میر نے کہاکہ ن لیگ اور پیپلز پارٹی مولانا فضل الرحمن کے مارچ اور ایک آدھ جلسے میں شریک ہوسکتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر مولانا فضل الرحمان مذہب کارڈ استعمال کررہے ہیں تو پھر حکومت کوگبھرانے کی کیا ضرورت ہے؟ وزراءجس طرح بیان بازیاں کررہے ہیں ، اس سے حکومت کی پریشانی عیاں ہوتی ہے۔

حامد میر کا کہنا تھا کہ ریاست مدینہ کی بات کرنے والے مولانا فضل الرحمان پر مذہب کارڈ استعمال کرنے کا الزام لگارہے ہیں ، میرا تو خیال ہے کہ ان کے درمیان میچ ہوہی جانا چاہئے تاکہ پتہ چل جائے کہ کس کے پاس زیادہ سیاسی طاقت ہے ؟

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -