انڈسٹریز کوآپریٹو سوسائٹیز کی قانونی حیثیت پر 15 اکتوبر کو معاونت طلب 

انڈسٹریز کوآپریٹو سوسائٹیز کی قانونی حیثیت پر 15 اکتوبر کو معاونت طلب 

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ نے رجسٹرار محکمہ کوآپریٹو کی انڈسٹریز کوآپریٹو سوسائٹیز کے امور میں مداخلت کے خلاف دائراپیل پرانڈسٹریز کوآپریٹو سوسائٹیز کی قانونی حیثیت پر 15 اکتوبر کو معاونت طلب کر لی ہے،دوران سماعت فاضل بنچ نے استفسارکیاکہ انڈسٹریز کی سوسائٹیز کو محکمہ کوآپریٹو کیسے رجسٹرڈ کر سکتا ہے؟ انڈسٹریز کی سوسائٹیز ایف بی آر یا ایس ای سی پی کے تحت رجسٹرڈ ہونی چاہئیں، اس نکتے پر عدالت کی معاونت کریں کہ انڈسٹریز سوسائٹیز کس محکمہ میں رجسٹرڈ ہوں گی؟ مسٹرجسٹس مسعود عابد نقوی اور جسٹس جواد حسن پر مشتمل دو رکنی بنچ نے انٹراکورٹ اپیل کی سماعت کی،پاکستان سائیکل انڈسٹریز کوآپریٹو سوسائٹی کی جانب سے رجسٹرار محکمہ کوآپریٹو کی معمول کے امور میں مداخلت کو چیلنج کیا گیاہے،درخواست گزار کا مؤقف ہے کہ انڈسٹری سوسائٹی پنجاب کوآپریٹو ایکٹ کے تحت رجسٹرڈ ہے اور امور چلا رہی ہے، رجسٹرار محکمہ کوآپریٹو سوسائٹی کے معمول کے امور میں مداخلت کر کے نوٹسز بھجوا رہے ہیں، بائی لاز کے تحت سوسائٹی کا بورڈ اپنے معمول کے امور چلانے اورفیصلے کرنے کا مجاز ہے، عدالت سے استدعاہے کہ رجسٹرار محکمہ کوآپریٹو کی انڈسٹری سوسائٹی میں معمول کی مداخلت غیرقانونی قرار دی جائے۔

معاونت طلب

مزید :

صفحہ آخر -