عالمی دن پر اساتذہ مشتعل‘ مطالبات منظوری کیلئے مظاہرے‘ ریلیاں 

عالمی دن پر اساتذہ مشتعل‘ مطالبات منظوری کیلئے مظاہرے‘ ریلیاں 

  

ملتان + وہاڑی + اڈا پل 14 + رحیم یار خان + میلسی + کبیروالا + مظفر گڑھ (سپیشل رپورٹر‘ بیورو رپورٹ‘ نامہ نگار‘ سپیشل رپورٹر‘ نمائندہ پاکستان) وائس چانسلر ویمن یونیورسٹی ملتان پروفیسر ڈاکٹر عظمیٰ قریشی نے کہا ہے کہ آپ ؐ کا فرمان ہے کہ مجھے معلم بنا کر بھیجا گیا ہے“۔ استادکی عظمت و رفعت اور اہمیت کے بیان کے لیے آپ کا یہی فرمان کافی و شافی ہے  اساتذہ میرا فخر(بقیہ نمبر3صفحہ 6پر)

 ہیں  مجھے اپنے تمام اساتذہ پر ہمیشہ فخر رہتا ہے کورونا کے ایام میں جس طرح ٹیچرز نے اپنے فرائض سرانجام دیئے ہیں وہ قابلِ تحسین ہے، ٹیچرز ڈے کے حوالے سے گفتگو  کرتے ہوئے  ان کا کہنا تھا کہ تدریس ایک معزز اور پیغمبرانہ پیشہ ہے اور دُنیا بھر میں اُستاد کو عزت اور احترام کی نظر سے دیکھا جاتا ہے۔ استاد خون پسینہ سے اپنے طلباء کی بغیر کسی لالچ و طمع کے تربیت کرتا ہے۔ قوم و ملک کی خوشحالی اور معاشرے کی ترقی میں استاد اہم کردار  ادا کرتا ہے، اساتذہ قوم کے معمار ہوتے  ہیں، جن قوموں نے آج دنیا میں ترقی کی ہے وہ استاد کی عزت و تکریم کی بدولت ہی حاصل کی ہے، مغربی معاشرے کی ترقی کی اصل وجہ اعلیٰ تعلیم حاصل کرنا ہے ہمیں موجودہ دور میں اپنے بچوں کو اعلیٰ تعلیم دینا ہوگی تاکہ وہ اقوام عالم میں ایک اچھا مقام حاصل کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ دن اساتذہ کے کردار کی اہمیت کو اجاگر کرتا ہے۔ ادھر اساتذہ کے عالمی دن کے موقع پر پنجاب ٹیچر یونین کی کال پر ضلع بھر میں ٹیچرز ڈے یوم سیاہ کے طور پر منایا گیا‘5اکتوبر کے دن دنیا بھر میں اساتذہ کا عالمی دن منایا گیا پنجاب ٹیچرز یونین کی کال پر ضلع بھر کے اساتذہ نے اپنے عالمی دن کو یوم سیاہ کے طور پر منایا اساتذہ نے اپنے بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ احتجاج کیا اور ریلی نکالی پنجاب ٹیچرز یونین کی مرکزی نائب صدر مسز عذرا عبدالحئی نے ریلی شرکاء کی قیادت کرتے ہوئے کہا کہ کرونا ایس او پیز کی آڑ میں اساتذہ کی تذلیل کی جارہی ہے اور انہیں معطل کیا جارہا ہے ہم اساتذہ کی ایسی بے عزتی ہرگز برداشت نہیں کریں گے  یہ کہاں کا انصاف ہے کہ اساتذہ کی غیر تدریسی ڈیوٹیاں لگائی جائیں اور کورونا ایس او پیز کے نام پر ٹیچرز کو معطل کیا جائے یہ اساتذہ کی عزت و تکریم کا یہ کون سا نیا طریقہ ہے ہم اس کو کسی صورت تسلیم نہیں کرتے تمام اساتذہ نے اپنے عالمی دن پر سیاہ پٹیاں باندھ کر تدریسی عمل جاری رکھیں گے جبکہ پی ٹی یو کے ضلعی صدر چوہدری عاشق علی کی قیادت میں جنرل سیکرٹری عبدالروف اور میاں نذیر احمد سمیت دیگر اساتذہ نے مختلف سکولز میں اپنا احتجاج ریکارڈ کروایااساتذہ نے مطالبات کے حق میں بھرپور نعرے بازی کی۔ اساتذہ کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے جہانیاں میں بھی ٹیچرز ڈے منایا گیاتعلیمی اداروں میں طلباء  نے ٹیچرز کو تحائف اور پھول پیش کر کے ان کی عظمت کو خراج تحسین پیش کیا اور انھیں پھولوں کے گلدستے پیش کیے.اقراء اسلامیہ روض الاطفال سکول جہانیاں میں طلباء نے اساتذہ کرام کو سلام عقیدت پیش کیا سکول ٹیچرز کو پھول,تحائف اور  گلدستے پیش کیے. طلباء کا کہنا ہے کہ استاد کا بلند مقام ہے ٹیچر طالب علم کی کردار سازی کرتا ہے اور اسے بلند مقام تک پہنچاتا ہے۔  5 اکتوبر کے موقع پر ٹیچر ڈے کو پنجاب ایجوکیٹر ایسوسی ایشن نے ضلع رحیم یارخان میں یوم سیاہ کے طور پر منایا۔اساتذہ کی جانب سے سکول میں سیاہ پٹیاں بازو پر باندھ کر تدریسی فرائض سرانجام دیتے ہوئے حکومت کو خاموش پیغام دیا۔اس موقع پر اساتذہ کا کہنا تھا کہ 2002 سے لے کر 2009 تک پنجاب کے تمام ایجوکیٹرز کے ملازمین کو شامل نہ کیا گیا‘ لہٰذا ہم پنجاب حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کے سات سال کی سروس کو بھی مراعات سمیت ریگولر کرکے بحال کریں۔اس موقع پر جاوید اختر دیول ڈویڑن صدر بہاولپورو ضلع رحیم یار خان‘ محمد ساجد رشید ضلعی جنرل سیکرٹری رحیم یار خان‘ لیاقت علی آہیر‘ زین منیر‘محمد شکیل‘محمد شفیق ودیگر نے پریس کلب میں احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ اگر پنجاب حکومت نے عدالتی فیصلے کو تسلیم نہ کیاتو ہمارا پرامن احتجاج جاری رہے گا۔مظاہرین نے کہا کہ پہ پروٹیکشن اینڈ سروس پروٹیکشن کنٹریکٹ پالیسی کا خاتمہ اور کنٹریکٹ پر بھرتی کیے گئے اساتذہ کو ٹائم اسکیل دیا جائے۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ایس ایس ای‘ اور اے ای او کی پی پی ایس سی کے بغیر ریگولر کیا جائے۔ پنجاب ایجوکیٹرز ایسوسی ایشن ضلع وہاڑی کی طرف سے میلسی میں ٹیچرز ڈے کو یوم سیاہ کے طور پر منایا گیا کیونکہ لاکھوں ایجوکیٹرز کو پے اینڈ سروس پروٹیکشن عدالتی فیصلوں کے باوجود نہیں دیا گیامتاثرہ اساتذہ کرام نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ پے اینڈ سروس پروٹیکشن، اساتذہ کی غیر مشروط مستقلی،ایس ٹی آر کا خاتمہ، یکساں سروس سٹرکچر، کنوینس الاونس، پروموشن میں دیگر سبجیکٹس کو بھی بحال کیا جائے اس موقع پر عبدالغفار عرفان، چوہدری طاہر گجر، محمد عاصم جاوید، عبدالجبار، ارسلان حسین غازی، محمد فہد عمر، حسن رضا، محمد محسن، راو ذیشان، ساجد اکرم، شاہد محمود عباسی، محبوب حکیم نے اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرہ کیا جس میں ضلع وہاڑی کی تمام تحصیلوں سے اساتذہ کرام نے خصوصی طور پر شرکت کی۔ دنیا بھر کی طرح میلسی میں بھی سرکاری  و  نجی سکولوں کے طلبہ نے '' ٹیچر ڈے'' جوش و خروش سے منایا  اور اساتذہ  کو پھول پیش  کئے گئے۔طلبہ نے استاد کی عظمت پر روشنی ڈالتے ہوئے بتایا کہ جب تک اساتذہ کی عزت نہیں کرو گے اس وقت تک صحیح علم حاصل نہیں ہوتا جو طالب علم اساتذہ کا ادب کریں گے جبکہ دوسری طرف اساتذہ نے بتایا کہ۔اساتذہ کے پاس علم کی بہت بڑی طاقت ہے جو وہ طالب علموں کی طرف منتقل کر رہے ہیں۔اساتذہ کو چاہیے کے اخلاص نیت کے ساتھ،جذبہ ایثار کے ساتھ،اور محبت و شفقت کے ساتھ اپنے طالب علموں کو پڑھائیں۔ ملک بھرکی طرح کبیروالا شہر اورگردونواح میں ”سلام ٹیچر ڈے“ جوش وجذبے کے ساتھ منایا گیا،سرکاری اور نجی تعلیمی اداروں میں طلباء نے اپنے اساتذہ کو گلدستے اور تحائف پیش کئے۔ایوان صحافت کبیروالا کے زیر اہتمام”سلام ٹیچر ڈے“ پر منعقدہ تقریب سے انجمن پٹواریان ضلع خانیوال کے صدر چوہدری نورسلطان سہو،صداقت حسین بھٹی،سید منتظر مہدی،مہر محمد افضل جوتہ،میاں عبدالحفیظ،سید ذوالقرنین حیدر بخاری،سید فرخ رضا،ملک خالد شفیق،سردار سجاد احمد خان سیال،ملک اللہ دتہ نائچ،چوہدری محمد رمضان چدھرڑ،حفیظ سعیدی،حافظ عبدالرحمن،راؤ نوشاد احمد،سردار اسلم حیات سیال،حاجی شفیق صدیق دھاریوال،چوہدری محمد یٰسین کمبوہ،سید شہزاد رضا اور دیگرنے استاد کی عظمت واحترام اور طلباء کی تعلیم وتربیت میں کردار پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دین اسلام نے ”استاد“ کو روحانی باپ اور انبیاء کرام کا وارث قرار دیا ہے،موجودہ دور میں سوشل میڈیا کے منفی استعمال نے جہاں دیگر اخلاقی برائیوں کے ذریعے اسلامی اقدار اور مشرقی روایات کو نقصان پہنچایا ہے،وہاں معاشرے میں قدر کی نگاہ سے دیکھے جانیوالے ”استاد“ کی عزت واحترام میں کمی لایا ہے،استاد اور شاگرد کے درمیان ”احترام“ کے رشتے کی بحالی وقت کی اہم ضرورت ہے،جس کیلئے ہم سب کو اپنے حصے کا کردار ذمہ داری کے ساتھ نبھانے کی اشد ضرورت ہے۔ ڈپٹی کمشنر انجینئر امجد شعیب خان ترین نے اساتذہ کے عالمی دن کے موقع پر محکمہ تعلیم کے زیر اہتمام سلام ٹیچر ڈے کے ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ڈی پی او محمد حسن اقبال، سی ای او تعلیم سید کوثر حسین شاہ، پرنسپل پوسٹ گریجویٹ کالج رانا مسعود اختر، پرنسپل کوڑے خان پبلک سکول طاہر بشیر بھی موجود تھے۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ تربیت کے بغیر تعلیم ادھوری ہے، اساتذہ تعلیم کے ساتھ ساتھ بچوں کو کردار سازی بھی کریں ان میں اعلی اخلاق اور حب الوطنی پیدا کریں تاکہ وہ ملک و قوم کی خدمت کرسکیں۔ انہوں نے کہا کہ میٹرک کے امتحانات میں مظفرگڑھ نے 100فیصد نتائج حاصل کر کے پنجاب بھر میں پہلی پوزیشن حاصل کی ہے جس پر تمام اساتذہ مبارکباد کے مستحق ہیں، قبل ازیں ڈی پی او محمد حسن اقبال نے اپنے خطاب میں کہا کہ جس ریاست میں سکول قائم ہیں وہ ریاست کبھی ناکام نہیں ہوسکتی، ہمارے پاس ایک تعلیمی نظام موجود ہے اس میں بہتری پیدا کی جاسکتی ہے، ہم اپنے مستقبل سے ناامید نہیں ہیں، اساتذہ گوہر نایاب تلاش کر کے ان میں نکھار پیدا کریں۔انہوں نے کہا کہ ضلع میں یونیورسٹی بھی بنے گی اور ہر تحصیل میں کیمپس بھی بنے گا۔ سی ای او تعلم سید کوثر حسین شاہ نے اپنے خطاب میں کہا کہ استاد کبھی شاگرد کو تاریکی کی طرف نہیں لے کر جاتا نور کی طرف لے کر جاتا ہے اگر آج کے استاد بھی ارسطو بن جائیں تو بے شمار سکندر اعظم پیدا ہوسکتے ہیں۔ پروفیسر رانا مسعود نے کہا کہ آج کا دن جہاں اساتذہ کو خراج تحسین پیش کرنے کا دن ہے وہاں خود احتسابی کا بھی دن ہے ہم نے طلباء کے دلوں میں قلم کی روشنائی کا تقدس اجاگر کرنا ہے۔ پرنسپل کوڑے خان سکول طاہر بشیر نے کہا کہ ہم قوم کے معمار ہیں اور قوموں کی قسمت ہمارے ہاتھ میں ہے لہذا ہم نے اپنے فرائض بااحسن ادا کرنے ہیں۔ اپنی کوتاہیوں پر نظر رکھنی ہے اور آگے کی طرف بڑھنا ہے۔ تقریب سے ڈی ای او اکبر بخاری، صدر ہیڈ ماسٹر ایسوسی ایشن رانا فرزند علی، ڈپٹی ڈی ای او منیر اکبر لغاری، اظہر حسین قریشی نے بھی خطاب کیا اور اساتذہ کو ان کی خدمات پر سلام پیش کیا۔ تقریب میں سرکاری و نجی تعلیمی اداروں کے سربراہان، اساتذہ، سول سوسائٹی کے نمائندگان نے شرکت کی، سٹیج سیکرٹری کے فرائض ام کلثوم سیال اور افضل چوہان نے سرانجام دئیے، تقریب کے اختتام پر اعلیٰ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے افسران اور اساتذہ کو شیلڈپیش کی گئیں۔

ٹیچرز ڈے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -