نصیر بھٹہ صاحب !آپ کی شکل بہت پیاری ہے ،اپنی پیاری سی شکل کو ماسک سے چھپاکررکھیں ،سپریم کورٹ کا دوران سماعت ماسک نہ پہننے پر وکیل سے اظہار ناراضگی 

نصیر بھٹہ صاحب !آپ کی شکل بہت پیاری ہے ،اپنی پیاری سی شکل کو ماسک سے ...
نصیر بھٹہ صاحب !آپ کی شکل بہت پیاری ہے ،اپنی پیاری سی شکل کو ماسک سے چھپاکررکھیں ،سپریم کورٹ کا دوران سماعت ماسک نہ پہننے پر وکیل سے اظہار ناراضگی 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے دھماکاخیزمواد برآمدگی کیس کے 2 ملزموں کو بری کردیا،مقدمے کی سماعت کے دوران ماسک نہ پہننے پر جسٹس منظور ملک نے وکیل سے اظہار ناراضگی کرتے ہوئے کہاکہ نصیر بھٹہ صاحب آپ کی شکل بہت پیاری ہے، اپنی پیاری سی شکل کو ماسک سے چھپاکررکھیں ، پیاری شکل دیکھ کر کئی شریف آدمی ڈر بھی جاتے ہیں۔

نجی ٹی وی جی این این کے مطابق سپریم کورٹ میں دھماکاخیزمواد برآمدگی کیس کے ملزموں کو ضمانت کی درخواست پر سماعت ہوئی ،وکیل درخواست گزار نے کہاکہ ملزموں کا تعلق کسی دہشتگرد تنظیم سے ثابت نہیں ہوسکا ۔

جسٹس منظور ملک نے استفسار کیا کیا ملزم سرکاری ملازم تھا؟،برادرنسبتی ملزم نے کہاکہ ملزم خالد مینٹل ہسپتال لاہور میں ملازم ہے ، جسٹس منظور ملک نے کہاکہ آپ لوگ ایسی حرکتیں کرتے ہی کیوں ہیں؟،یہ کیا بات ہوئی آپ جس ملک میں رہتے ہیں اس کے ہی خلاف ہو جائیں ،ملزم اتنے ہی شریف ہیں تو اسلحہ اوربارود کاکیاکرناتھا؟،ایسے افراد اور تنظیموں سے ملنے اورشامل ہونے کی ضرورت ہی کیا ہے ۔

برادرنسبتی ملزم نے کہاکہ پولیس نے بلاوجہ میرے بہنوئی کو گرفتار کیا، جسٹس منظور ملک نے کہاکہ پولیس یاایجنسیوں کو کیادشمنی تھی جو ملزم کو گرفتار کیا،برادرنسبتی ملزم نے کہاکہ ملزم 5 بچوں کا باپ اور5 سال سے جیل میں ہے ،جسٹس منظور ملک نے کہاکہ جتنا جرم ملزموں نے کیا اس کی 5 سال سزاکافی ہے ،اپنے بہنوئی سے کہنا انسان کا بچہ بن کر رہے، عدالت نے دھماکاخیزمواد برآمدگی کیس کے 2 ملزموں کو بری کردیا۔

 مقدمے کی سماعت کے دوران ماسک نہ پہننے پر جسٹس منظور ملک نے وکیل سے اظہار ناراضگی کرتے ہوئے کہاکہ نصیر بھٹہ صاحب آپ کی شکل بہت پیاری ہے ،اپنی پیاری سی شکل کو ماسک سے چھپاکررکھیں ، پیاری شکل دیکھ کر کئی شریف آدمی ڈر بھی جاتے ہیں۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -