" میں لڑکے سے جنس تبدیل کروا کر لڑکی بنی اور یہ سفر آسان نہ تھا" معروف گلوکارہ شاعرہ رائے نے آپ بیتی سنادی

" میں لڑکے سے جنس تبدیل کروا کر لڑکی بنی اور یہ سفر آسان نہ تھا" معروف گلوکارہ ...
کیپشن:    سورس:   fb/shyraaroy

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) معروف گلوکارہ شاعرہ رائے نے پہلی بار اپنی جنس اور زندگی پر کھل کر بات کی اور بتایا کہ کس طرح انہیں جنس تبدیل کروانے سے قبل مسائل کا سامنا کرنا پڑتا تھا۔

انڈیپنڈنٹ اردو کو دیئے گئے انٹرویو میں شاعرہ رائے کا کہنا تھا کہ وہ  جو بات کرنے جارہی ہیں، اس کے بارے میں پہلے نہیں کی تھیں، لوگ جینڈر کے بارے میں پوچھتے ہیں، یہ سچ ہے کہ میں ٹرانس جینڈ ر عورت ہوں، میں وہ لڑکی ہوں جس نے اپنی جنس کو ایک طرف سے دوسری طرف موڑا، یہ سفر بہت مشکل رہا اور ابھی جاری ہے ، تنقید بھی ہوتی ہے ، میں نے اپنا حلقہ احباب چھوٹے سے چھوٹا کردیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ جنس تبدیل کروانے سے قبل بھی انہیں بہت سارے لوگ پریشان کرتے تھے اور تبدیلی جنس کے بعد انہیں مزید تنگ کیا گیا، جس کے باعث انہوں نے کم سے کم لوگوں سے تعلقات رکھے، میں نے کیا غلط کام کردیا جس کے نتیجے میں آپ سے اتنی حقارت کی جاتی ہے ، ایسی چیزیں ہوتی ہیں جن پر آپ کا کنٹرول نہیں ہوتا۔

انہوں نے کہا کہ میں جب چھوٹی تھیں تو اپنے حد تک جانتی تھی اور میری والدہ کو بھی کسی حدتک معلوم تھا، پیدائش سے لے کر تقریبا بلوغت تک لڑکا ہی تھیں تاہم ان میں کبھی بھی لڑکوں والے احساسات نہیں جاگے اور ان کی شکل بھی لڑکیوں کی طرح تھی،وہ بچپن سے ہی اپنے جنسی مسائل سے متعلق آگاہ تھیں اور ان کی والدہ کو بھی ان کی پریشانیوں کا علم تھا مگر ان کی باتوں پر کوئی یقین نہیں کرتا تھا اور ہر کوئی سمجھتا تھا کہ وہ بہانے اور ڈرامے کر رہی ہیں، لوگ درمیانہ، میٹھا اور گے کے الفاظ بھی پکارتے تھے، میں نے یہ چیزیں اپنےساتھ محسوس کیں تو گھر کا ماحول اس طرح کا نہیں تھا کہ کھلے عام یہ بات کرسکیں، فیملی کو کہیں نہ کہیں معلوم تھی لیکن ابھی تک مانتے نہیں۔

جب آپ جنس بدلتے ہوتو اس کے پیچھے کوئی مذاق نہیں ہوتا، وہ اپنی زندگی کو ڈال مڈال نہیں کرنا چاہتا ۔ میری ان لوگوں سے درخواست ہے کہ میری جیسی لڑکیاں اپنی جنس بدل کر کوئی بہت بڑا گناہ کررہی ہیں یا کوئی بہت بڑا عذاب ہے ، ان کے بارے ایسا کہنا چھوڑ دیئے ، ہوسکتا ہے کہ آپ کی بھی غلطی ہو یا آپ کے ہی خوف کی وجہ سے وہ نہ بتا رہے ہوں، خود کشی کرلیں، جیسے میں نے کوشش کی تھی، ایسے لوگوں کو سپورٹ کیجئے ، اکیلے پن میں رہ کر انسان ختم ہوجاتاہے ، یہ سفر اور دنیا بہت ظالم ہے ،ا س ظلم کو ختم کریں اور ٹرانسجینڈر خواتین کو سیکیورٹی دیں اور عزت کریں۔ 

خیال رہے کہ شاعرہ رائے پنجاب کے شہر سیالکوٹ میں پیدا ہوئیں اور بچپن میں ہی والدین کے ہمراہ صوبائی دارالحکومت لاہور منتقل ہوگئیں، جہاں انہوں نے کالج تک تعلیم حاصل کی۔دوران تعلیم بھی انہیں تنگ کیا جاتا رہا اور انہوں نے کالج کی تعلیم کے دوران ہی اپنی جنس تبدیل کروائی، جس کے بعد وہ اعلیٰ تعلیم کے لیے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کی ریاست دبئی چلی گئیں۔

علاوہ ازیں جلد ہی شاعرہ رائے کا گانا کملی ریلیز ہوگا، جس میں وہ اداکار محسن عباس حیدر کے ساتھ جلوے بکھیرتی دکھائی دیں گی۔

مزید :

تفریح -