ہمارا جواب پید اکر| شورش کاشمیری |

ہمارا جواب پید اکر| شورش کاشمیری |

  

ہمارا جواب پید اکر

ہر حال میں ہر دور میں تابندہ رہوں گا

میں زندۂ جاوید ہوں پائندہ رہوں گا

تہذیبِ خطابت ہو کہ تہذیبِ صحافت

ان دونوں محاسن کا نمائندہ رہوں گا

اُبھروں گا سرِ پردۂ آفاق سے بے روک

خورشیدِ جہاں تاب ہوں رخشندہ رہوں گا

تاریخ مرے نام کی تعظیم کرے گی

تاریخ کے اوراق میں آئندہ رہوں گا

احرار سمجھتے ہیں مری بات کو شورش

ناموسِ محمدؐ کی قسم، زندہ رہوںگا

شاعر: شورش کاشمیری

(مجموعۂ کلام: گفتنی و ناگفتنی؛سالِ اشاعت،1963 )

Hamaara   Jawaab

Har   Haal   Men   Har   Daor   Men   Tabinda   Rahun   Ga

Main   Zinda-e-Javed    Hun    Paainda   Rahun   Ga

Tehzeeb -e-Khataabat   Ho   Keh   Tehzeeb -e- Sahaafat

In   Donon    Mahaasin   Ka    Numaainda   Rahun   Ga

Ubhrun   Ga   Sar-e-Parda-e-Aafaq   Say   Be   Rok

Khursheed-e-Jahaan   Taab   Hun    Rakhshinda   Rahun   Ga

Tareekh   Miray   Naam   Ki   Tazeem   Karay   Gi

Tareekh   K    Aoraaq    Men    Aainda   Rahun   Ga

Ehraar    Samjhtay   Hen   Miri    Baat   Ko   SHORISH

Namoos-e-MUHAMMAD    Ki   Qasam  ,  Zinda   Rahun   Ga

Poet: Shorish   Kashmiri

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -سنجیدہ شاعری -