پنڈورا پیپرز نے عمران کابینہ بے نقاب کر دی، کرپٹ افراد کو احتساب کا حق نہیں:فضل الرحمن

پنڈورا پیپرز نے عمران کابینہ بے نقاب کر دی، کرپٹ افراد کو احتساب کا حق ...

  

         پشاور (آن لائن)جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے وزیر اعظم عمران خان کے اس بیان کو مسترد کردیا کہ حکومت، کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے کچھ گروپوں سے بات کر رہی ہے،انکا کہناتھا  'درحقیقت کوئی اور ان گروپوں سے مذاکرات کر رہا ہے اور حکومت اس کا سہرا اپنے سر سجانے کی کوشش کر رہی ہے، حکومت اس عمل کا حصہ نہیں ہے'۔ وہ  جے یو آئی (ف) کے سربراہ ایک تقریب سے خطاب کر رہے تھے،مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ 'پنڈورا پیپرز' نے وفاقی کابینہ کے اراکین، ریٹائر جنرلز، بیوروکریٹس و دیگر کو بے نقاب کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاناما لیکس میں 400 سے زائد بااثر پاکستانیوں کے نام تھے لیکن صرف سابق وزیر اعظم نواز شریف کو ہدف بنایا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ ’’پنڈورا پیپرز“میں عمران خان کی کابینہ کو بے نقاب کیا ہے،  چور اس حکومت کے اندر ہیں جنہوں نے نام نہاد چوروں کے خلاف نعرہ لگایا۔ مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ اس طرح کے اسکینڈلز، سیاست دانوں کو بدنام کرنے کے لیے استعمال کیے جاتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ کرپٹ افراد کو دوسروں کا احتساب کرنے کا حق حاصل نہیں ہے۔حکومت کے انتخابی اصلاحات کے منصوبے پر سربراہ جے یو آئی (ف) کے سربراہ نے کہا کہ آئندہ انتخابات کے لیے الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) قابل قبول نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن پاکستان کی جانب سے ای وی ایم قبول نہیں کی گئی اور انہوں نے اس پر 37 تحفظات کا اظہار کیا ہے، ان ووٹنگ مشینوں پر جرمنی میں پابندی عائد کردی گئی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اسٹیبلشمنٹ کو ”جعلی حکومت“ کی حمایت نہیں کرنی چاہیے، ریاستی ادارے 'سلیکٹڈ' وزیر اعظم کی حمایت کرکے اپنی ساکھ متاثر کر رہے ہیں۔

فضل الرحمن 

مزید :

صفحہ اول -