پاکستانی اور بھارتی لڑکا لڑکی نے ملکر تاریخ ساز منصوبہ متعارف کروادیا، ایسے کام پر لگ گئے کہ کامیابی مل گئی تو دنیا کی تقدیر بدل جائے

پاکستانی اور بھارتی لڑکا لڑکی نے ملکر تاریخ ساز منصوبہ متعارف کروادیا، ایسے ...

ابوظہبی (مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ عرب امارات میں زیر تعلیم پاکستان اور بھارت کی ایک لڑکی اور لڑکے نے مستقبل کے شہروں کے لئے ایک اچھوتی ٹیکنالوجی کا آئیڈیا متعارف کروا کے دنیا کو حیران کر دیا ہے۔

گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق 25 سالہ ارسلان انجم اور 24سالہ حبہ ریاض مصدر انسٹی ٹیوٹ میں مائیکرو سسٹمز انجینئرنگ کے سٹوڈنٹ ہیں۔ انہوں نے جدید ٹیکنالوجی کی ایجاد کے لئے منعقد ہونے والے سالانہ عالمی مقابلے میں اپنے پراجیکٹ کی تجویز بھیجی تھی۔ دنیا کے 182 ممالک کی 1200 سے زائد ٹیموں میں کے مقابلے کے بعد فائنل میں پہنچنے والی ٹیموں میں ان کا انتخاب بھی ہوگیا ہے ۔

’اگر زندگی میں امیر بننا چاہتے ہو تو سب سے پہلے۔۔۔‘ چین کے امیر ترین آدمی نے نوجوانوں کو ایسا مشورہ دے دیا کہ سب کے منہ کھلے کے کھلے رہ گئے

ارسلان اور حبہ نے ابوظہبی میں پیدل چلنے اور سائیکلنگ کے لئے بنائے گئے راستوں کو سولر راستوں میں تبدیل کرنے کا پراجیکٹ تجویز کیا ہے، جس کے تحت راستوں پر سولر پینل لگائے جائیں گے تاکہ یہ ناصرف عوام کی چہل قدمی کے لئے استعمال ہوں بلکہ بجلی بھی بنائیں۔ اس پراجیکٹ کے تحت راستوں پر غیر معمولی مضبوطی کے حامل سولر پینل لگائے جائیں گے تاکہ ان پر چلنے یا سائیکل چلانے سے انہیں کوئی نقصان نہ پہنچے۔

”گوگرین ان دی سٹی“ مقابلہ شنیڈر الیکٹرک کمپنی کے تحت ہر سال منعقد ہوتا ہے اور اس میں دنیابھر کے اعلیٰ ترین تعلیمی اداروں کی سینکڑوں ٹیمیں حصہ لیتی ہیں۔ فائنل مقابلے میں حصہ لینے کے لئے دونوں سٹوڈنٹ اس ماہ کے آخر میں پیرس جائیں گے۔ اس مقابلے کی فاتح ٹیم کو دنیا بھر کی مفت سیر کروائی جاتی ہے اور شنیڈر الیکٹرک کمپنی میں ملازمت کا موقع فراہم کیا جاتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس