جرمنی میں مسلمانوں کی داعش مخالف ریلی اور مظاہرے

جرمنی میں مسلمانوں کی داعش مخالف ریلی اور مظاہرے

برلن(این این آئی)جرمنی کے شہر بریمن میں دائیں اور بائیں بازو کی سوچ کے حامل افراد نے سلفی اسلامی مبلغ پیئر فوگل کی ریلی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرے کے دوران پولیس کی بھاری نفری تعینات رہی۔یہ احتجاجی مظاہرے اور سلفی مسلمانوں کی ریلی شہر کے مرکزی ریلوے اسٹیشن کے قریب منعقد ہوئے،میڈیارپورٹس کے مطابق انتہائی قدامت پسند اسلامی تحریک ’سلفیت‘ کے مخالفین گزشتہ روز جرمنی کے شمال شہر بریمن میں سلفی اسلام کے مبلغ پیئر فوگل کی ریلی کے خلاف مظاہرے کرنے جمع ہوئے۔ پولیس کے مطابق دائیں بازو سے تعلق رکھنے والوں کے مظاہرے میں ایک سو پچاس جبکہ بائیں بازو کے نظریات کے حامل افراد کے مظاہرے میں قریب دو سو افراد شریک ہوئے۔ خود فوگل کی ریلی میں لگ بھگ تین سو افراد نے حصہ لیا تھا جن میں کچھ خواتین بھی شامل تھیں جنہوں نے برقعے پہن رکھے تھے،بریمن حکام فوگل کو سلفی نظریات پھیلانے کا بڑا ذریعہ سمجھتے ہیں۔ فوگل نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہ داعش اسلام نہیں ہے کے موضوع پر بات کی۔

مزید : عالمی منظر