ا ظہر کی کمزور قیادت اور انتخاب عالم کی نرمی نے نیا تنازعہ پیدا کردیا

ا ظہر کی کمزور قیادت اور انتخاب عالم کی نرمی نے نیا تنازعہ پیدا کردیا

مانچسٹر (افضل افتخار سے)پاکستان کرکٹ ٹیم کی ون ڈے سیریز میں انگلینڈ کے ہاتھوں شکست ،اظہر علی کی کمزور کپتانی اور ٹیم منیجر انتخاب عالم کی نرمی کی وجہ سے قومی ون ڈے کرکٹ ٹیم کے ڈسپلن کے ایشو سامنے آنا شروع ہوگئے ۔تنازعات میں الجھی ٹیم کے کھلاڑیوں کو سابق منیجر نوید اکرم چیمہ نے بہت محنت اور سختی کے ساتھ ڈسپلن کا عادی بنایا تھا لیکن موجودہ ٹیم منیجر کی نرمی کی وجہ سے کھلاڑی اور ٹیم مینجمنٹ کے اراکین اپنے ہوٹل سے رات کے وقت گھومنے اور دوستوں سے ملنے کے لئے مکمل طور پر آزاد نظر آرہے ہیں ۔پاکستان اور انگلینڈ کے مابین سیریز کے دوران کھلاڑیوں کو رات کے وقت ہوٹل سے باہر جاتے نظر آنا معمول کا حصہ بن چکا ہے ۔ٹیم منیجر انتخاب عالم اپنی نرمی اور ٹیم کے کپتان اظہر علی ون ڈے سیریز میں پے درپے شکست کے بعد کھلاڑیوں پر سختی نہیں کررہے جس کی وجہ سے ان میں ڈسپلن کا فقدان نظر آرہا ہے ۔

ون ڈے میچ سے قبل ہونے والے ٹریننگ سیشن کے دوران بھی کھلاڑی کی زیادہ تر تعداد بے دلی سے پریکٹس میں حصہ لیتی ہے جس کی وجہ سے ون ڈے میچز میں ان کی پرفارمنس پر کافی اثر پڑتا ہے ۔ واضع رہے کہ قومی ٹیم کے سابق منیجر نوید اکرم چیمہ کو فیڈرل پبلک سروس کمیشن کا چیئرمین بننے کی وجہ سے مینجر کا عہدہ چھوڑنا پڑ گیا تھا جس کے بعد انتخاب عالم کو ٹیم کا منیجر بنایا گیا تھا تاہم وہ نوید اکرم چیمہ کی طرح ڈسپلن میں سخت نہیں ہیں ۔نوید اکرم چیمہ کے دور میں کھلاڑی کہتے تھے کہ نوید اکرم چیمہ نے بطور منیجر ٹیم کے ہوٹل میں کرفیو لگایا ہوتا تھا۔تاہم دوسری طرف پی سی بی کے ذرائع کا کہنا ہے کہ کھلاڑیوں میں ڈسپلن کا کوئی ایشو نہیں اور تمام کھلاڑی ڈسپلن کی سختی سے پابندی کررہے ہیں ۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی