دہشتگردی کی حمایت کرنیوالے ممالک کو تنہا کرکے پاپندیاں لگائی جائیں ، مودی

دہشتگردی کی حمایت کرنیوالے ممالک کو تنہا کرکے پاپندیاں لگائی جائیں ، مودی

 ہانگ ژو( اے این این) کشمیریوں کیخلاف بدترین ریاستی دہشت گردی کے مرتکب بھارت کے وزیراعظم نریندر مودی نے الٹاچورکوتوال کوڈانٹے کے مصداق الزام عائدکیاہے کہ بعض ممالک دہشت گردی کوریاستی پالیسی کے طورپراستعمال کرتے ہیں جبکہ جنوبی ایشیاء کا صرف ایک ملک دہشت گردی کے ایجنٹ پھیلا رہا ہے،دہشت گردکی حمایت کرنے والوں کوتنہاء کیااوران پرپابندیاں لگائی جائیں ۔ چین کے شہر ہانگ ژو میں گروپ 20 سربراہ اجلاس کے اختتامی نشست سے خطاب کرتے ہوئے نریندر مودی نے کہا کہ جنوبی ایشیاء میں صرف ایک ملک خطے کے دوسرے ملکوں میں دہشت گردی کے ایجنٹ پھیلا رہا ہے ۔ دہشت گردی کی حمایت کرنے والوں کو تنہا کیا جانا چا ہیے اور ان پر پابندیاں لگائی جانی چاہیے نہ کہ انہیں نوازا جانا چاہیے، ہم توقع کرتے ہیں کہ عالمی برادری دہشت گردی سے نمٹنے کیلئے متحد ہوکر کام کرے گی۔ انہوں نے کہاکہ بھارت دہشت گردی کیلئے مالی وسائل سے نمٹنے سے متعلق گروپ 20 کے اقدامات کو سراہتا ہے ، تمام ملکوں کو فنانشنل ایکشن ٹاسک فورس کے معیار کو پورا کرنا چاہیے ۔ انہوں نے کہاکہ تشدد اور دہشت کی قوتوں میں اضافہ بنیادی چیلنج ہے بعض ملک ایسے ہیں جو دہشت گردی کو ریاستی پالیسی کے طورپر استعمال کرتے ہیں۔ بھارت نے دہشت گردی کے خلاف عدم برداشت کی پالیسی اپنا رکھی ہے کیونکہ اس سے کم کچھ بھی کافی نہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہمارے لئے دہشت گرد دہشت گرد ہی ہے۔اس سے پہلے گزشتہ روز کانفرنس کی افتتاحی نشست سے خطاب کرتے ہوئے بھارتی وزیراعظم نے برکس کو ایک انتہائی موثر تنظیم قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی ایجنڈا طے کرنا ابھرتی ہوئی معیشتوں کی تنظیم برکس کی ذمہ داری ہے- ہندوستانی وزیراعظم نے کہا کہ یہ ہماری مشترکہ ذمہ داری ہے کہ ہم بین الاقوامی ایجنڈا اس طرح تیار کریں کہ جس سے ترقی پذیر ممالک کو ان کا ہدف حاصل کرنے میں مدد ملے- ہندوستان کے علاوہ روس، چین، برازیل اورجنوبی افریقہ برکس کے رکن ممالک ہیں۔

مزید : صفحہ اول