ملاکنڈ میں تیسری تحصیل کے اعلان سے عوام تذبذب کا شکار

ملاکنڈ میں تیسری تحصیل کے اعلان سے عوام تذبذب کا شکار

بٹ خیلہ(بیورورپورٹ) ملاکنڈ میں تیسری تحصیل کے اعلان کے بعد ضلع ملاکنڈ کے عوام تذبذب کے شکار ہو گئے ۔ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ نے تھانہ جلسہ کے دوران ملاکنڈ میں تیسری تحصیل کے قیام کا اعلان کیا تھا۔ اعلان کے بعد اُتمان خیل تحصیل بنے گی یا بائزئی تحصیل ؟عوام سر پکڑ کر بیٹھ گئے ۔ تفصیلات کے مطابق :۔ وزیر اعلیٰ پرویز خان خٹک نے تھانہ جلسہ کے دورا ن ملاکنڈ میں تیسرے تحصیل کے قیام کا اعلان کیا تھا لیکن وضاحت نہ ہونے سے عوام تذبذب کے شکار ہو گئے ہیں کیونکہ قوم اُتمان خیل پر مشتمل علاقے کے لئے الگ تحصیل دار عرصہ سے ڈیوٹی کر رہا ہے جبکہ اب اعلان کے بعد بائزئی تحصیل کی باتیں بھی ہو رہے ہیں اور تھانہ سے منتخب ایم این اے جنید اکبر خان کی الگ تحصیل کے لئے بھاگ دوڑ کرنے کا بھی انکشاف ہوا ہے جس سے عرصہ دراز سے الگ تحصیل کے لئے بھاگ دوڑ کرنے والے قوم اُتمان خیل میں شدید مایوسی پائی جاتی ہے جبکہ دوسرے طرف ایم این اے جنید اکبر خان سے اہلیان علاقہ الگ تحصیل کے لئے مطالبہ کر رہے ہیں اور عوام کسی صورت تھانہ تحصیل سے د ستبردار ہونے کے لئے تیار نہیں ہیں ۔نئے تحصیل کے اعلان کیساتھ تحصیل بٹ خیلہ سے منتخب ہونے والے ممبران اسمبلی کا بھی امتحان شروع ہو گیا ہے اور عوام اس بات کے منتظر ہیں کہ یہی منتخب ممبران اُتمان خیل یا تھانہ تحصیل کے لئے آواز اُٹھاتے ہیں ؟ ۔ وزیر اعلیٰ پرویز خان خٹک نے تیسرے تحصیل کا اعلان تو کیا ہے لیکن وضاحت نہ ہونے پر سیاسی طور پر چپلقش پیدا ہونے کے بھی خدشات ہیں اور جس تحصیل بھی فیصلہ ہوگا تو دیگر قومیں اور علاقوں کے عوام اسے کسی صورت قبول نہیں کرینگے جس سے عوام اور سیاسی کارکنوں اور قائدین کے درمیان اختلافات پید ا ہونگے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر