جندول ،تالاش بازار میں دکان اور سٹور میں آتشزدگی

جندول ،تالاش بازار میں دکان اور سٹور میں آتشزدگی

جندول(نمائندہ پاکستان ) تالاش بازار میں آگ بھڑک اُٹھنے سے بیکری کی دکان، سٹور اور ایک پک اپ ڈاٹسن جل کر راکھ کی ڈھیر میں تبدیل ہوگئے،مقامی باشندوں کے مطابق اتوار اور پیر کی درمیانی شب نامعلوم وجوہات کے بناء پر سردار داؤد کی بیکری میں آگ بھڑک اُٹھی جس کے شعلوں نے پورے مارکیٹ کو لپیٹ لے لیا،مقامی لوگ قریبی مساجد سے اعلانات سُن کر جمع ہوگئے تاہم آگ کے شعلے اُن کے قابوسے باہر تھے،تیمرگرہ سے فائر بریگیڈ کی گاڑی منگوائی گئی جو ایک گھنٹے کی تاخیر سے پہنچی،آگ نے بیکری ،اس سے ملحقہ سٹوراور ایک گیراج کو مکمل طور پر تباہ کردیادُکان اور سٹور میں موجود تمام سامان جبکہ گیراج میں کھڑی پک آپ ڈاٹسن شعلوں کی نذر ہوگئے۔پیر کر روز صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے سردار داؤد ولد عبدالقیوم نے بتایا کہ اُس کے دُکان اور سٹور میں بیس لاکھ روپے کا سامان موجود تھا جس میں عید قربان کیلئے مکمل تیاری کی گئی تھی ڈاٹسن نمبر Dir-C6000 کے مالک ولی رحمان ولد سلطان حمید نے کہا کہ انھوں نے چند ہفتے پہلے یہ گاڑی آٹھارہ لاکھ روپے میں خریدی تھی جو آگ کی وجہ سے مکمل تباہ ہوئیدریں اثناء انجمن تاجران تالاش نے ایک ہنگامی اجلاس کے دوران خیبر پختونخواہ، دیر پائین کے حکومتوں اور انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ایک ٹیم بھیج کر غریب لوگوں کے نقصانات کا جائزہ لیں اور ان کے ساتھ بھرپور مالی امداد کی جائے۔ انجمن کے صدر ڈاکٹر نور محمد نے اجلاس کو بتایا کہ دونوں متاثرین محنت کش اور غریب ہیں اور حکومتی امداد کے حقدار ہیں۔انھوں نے کہا کہ تالاش بازار کی تنظیم اپنی مدد آپ کے تحت ان کے ساتھ بھرپور تعاون کرے گی لیکن حکومت کا فرض بنتاہے کہ وہ بھی اُن کے ساتھ مالی تعاون کریں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر