کوہاٹ،لوکل گورنمنٹ ایکٹ میں سرکاری فنڈز سے تعمیر گلیوں کی توڑ پھوڑ کرنیوالوں کیلئے سزا وجرمانہ مقرر

کوہاٹ،لوکل گورنمنٹ ایکٹ میں سرکاری فنڈز سے تعمیر گلیوں کی توڑ پھوڑ ...

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) خیبر پختونخوا حکومت نے لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2013 میں سرکاری فنڈز سے تعمیر سڑکوں‘ گلیوں نالیوں کو نقصان پہنچانے والوں کے لیے سزا اور جرمانے کا تعین کر دیا جس کے تحت شیڈول 5 میں مختلف شقوں کی خلاف ورزی پر متعلقہ محکمے کے اہلکاروں کو جرمانے کاا ختیار دیا گیا ہے لوکل گورنمنٹ ایکٹ کے تحت اب جگہ جگہ گندگی اور کوڑہ پھینکنے والوں کے خلاف WSSC کے انفورسمنٹ افسران کارروائی کر سکیں گے اس شیڈول کی سیکشن 15 کے مطابق بغیر اجازت راستوں اور گلیوں میں جانوروں کا باندھنا‘ کھڑا کرنا وغیرہ پر 2000 روپے جرمانہ ادا کرنا پڑے گا اسی طرح سیکشن17 کے تحت مردہ جانوروں کی لاشوں کو ممنوعہ حدود میں ٹھکانے لگانے والوں کو 1500 روپے جرمانہ ادا کرنا ہو گا سیکشن19 کے تحت غلاظت کوڑے کرکٹ یا کچرے کا کسی گلی یا ایسی جگہ پر ڈالنا جو گندگی کے لیے مختص نہ ہو ایسے افراد پر 5000 روپے جرمانہ لگایا جائے گا اسی طرح دکان کے اندر یا باہر اس کے مالک کی جانب سے کوڑا یا کچرا ٹھکانے کی جگہ فراہم کرنے کی ناکامی کی صورت میں بھی سیکشن 20 کے تحت 5000 روپے تک جرمانہ ہو گا سیکشن 22 کے تحت کسی بھی کنویں کے نزدیک یا آبنوشی کے ذرائع کے پاس جانوروں کو پانی پلانا یا نہلانا جرم ہو گا جس پر 1500 روپے جرمانہ ہو گا کسی بھی پرائیویٹ یا سرکاری جگہ پر ماحول کو اس طریقے سے نقصان پہنچانا یا آلودہ کرنا جو صحت عامہ کے لیے مضر ہو سیکشن26 کے تحت 6000 روپے جرمانہ ہو گا جبکہ مقامی حکومت کی تحریری اجازت کے بغیر سرکاری زمین پر کھدائی کرنے پر سیکشن 44 کے تحت 10 ہزار روپے جرمانہ اداکرنا پڑے گا واضح رہے عوامی فلاح و بہبود اور ماحول کو بہتر اور فضاء کو آلودگی سے بچانے کے لیے خیبر پختونخوا حکومت نے نہایت سختی سے احکامات جاری کیے ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...