پرویز اشرف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

پرویز اشرف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

اسلام آباد( آن لائن)اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے معاملہ پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔ گزشتہ روز کیس کی سماعت چیف جسٹس اطہر من اللہ کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کی۔دور ان سماعت نمائندہ وزارت داخلہ نے بتایاکہ راجہ پرویز اشرف کا نام 2013 سے ای سی ایل پر موجود ہے۔عدالت نے استفسار کیا کہ اس بات کا تعین کیسے کیا جائے کہ ٹرائل کے دوران ملک سے باہر جا کر ملزم واپس آئیگا۔ فاروق ایچ نائیک نے کہاکہ یہ عدالت راجہ پرویز اشرف سے ضمانت لے لے، وہ کیس کی سماعت سے پہلے واپس آئیں گے۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ فاروق صاحب کیا آپ راجہ پرویز اشرف کی ضمانت دینگے انہوں نے کہاکہ راجہ صاحب میری پارٹی کے لیڈر ہیں، میں انکی ضمانت دینے کو تیار ہوں۔جسٹس محسن کیانی نے کہاکہ جب وفاقی حکومت کو اعتراض نہیں تو پھر کیس تو عدالت میں ہے نیب کو کیوں اعتراض ہی اگر کیسز اسلام آباد کی احتساب عدالت میں چل رہے ہوتے تو ہم رپورٹ منگوا لیتے۔ پراسیکیوٹر نیب نے کہاکہ اسحاق ڈار کے کیس میں وہ ملک سے باہر گئے اور واپس لوٹ کر نہیں آئے۔ فاروق ایچ نائیک نے کہاکہ راجہ پرویز اشرف کو کوئی ایسا آرڈر نہیں ملا کہ آپکا نام ای سی ایل میں ڈالا گیا، اسلام آباد کی احتساب عدالت نے راجہ پرویز اشرف کو کیسز میں حاضری سے استثنی دے رکھا ہے۔انہوں نے کہاکہ عدالت نے نیب اور وزارت داخلہ کو پیراوائز کمنٹس جمع کرانے کا حکم دیا تھا۔ وزارت داخلہ نے عدالتی حکم پر پیراوائز کمنٹس جمع کروا دئیے۔وزارت داخلہ نے کہاکہ کیس احتساب عدالت میں ہے وہی عدالت نام ملک سے باہر جانے کا فیصلہ کریگی۔ جسٹس محسن اختر کیانی نے کہاکہ کیا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا معاملہ وزارت داخلہ کے اختیار سے نکل گیا ہے، وزارت داخلہ نے اپنے اختیارات سرینڈر کر دئیے ہیں۔انہوں نے کہاکہ سیکرٹری وزارت داخلہ اب نام ای سی ایل میں ڈالنے سے متعلق فیصلے نہیں لیں گے۔ انہوں نے کہاکہ یہ کیا بات ہوئی کہ متعلقہ ادارے نے سارا معاملہ عدالت پر ڈال دیا۔ فاروق ایچ نائیک نے کہاکہ جب وزارت داخلہ کو اعتراض نہیں تو نیب کو تو کوئی اعتراض ہونا ہی نہیں چاہیے، لاہور کی احتساب عدالت نے پیش ہونے پر راجہ پرویز اشرف کے وارنٹس کینسل کر دئیے ہیں۔چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ راجہ پرویز اشرف سابق وزیراعظم ہیں لیکن یہ عدالت انکو اجازت نہیں دے سکتی۔چیف جسٹس نے کہاکہ اگر راجہ پرویز اشرف کو اجازت دیدیں تو پھر یہ فیصلہ دیگر کیسز پر بھی اثرانداز ہو گا۔ انہوں نے کہاکہ راجہ پرویز اشرف کا نام ای سی ایل پر موجود ہی نہیں۔عدالت نے فریقین کے دلائل سن کر نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔

پرویز اشرف

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...