اداروں کی مضبوطی تسلسل سے کام جاری رکھنے میں ہے: چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ

  اداروں کی مضبوطی تسلسل سے کام جاری رکھنے میں ہے: چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ

  لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ سردار محمدشمیم خان نے کہا ہے کہ محنت، لگن اور جذبے سے ہی منزل حاصل ہوتی ہے،سپریم کورٹ کے مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ کا کہناہے کہ اداروں کی مضبوطی تسلسل سے کام جاری رکھنے میں ہے،پنجاب کی کروڑوں کی آبادی کے لئے ہائیکورٹ کے 60جج ہیں،ایک لاکھ 80ہزار افراد کی آبادی کے فیصلے ایک جج کرتاہے،وہ گزشتہ روز تربیتی کورس مکمل کرنے والے لاہور ہائی کورٹ کے ریسرچ آفیسرز کے اعزاز میں تقریب سے خطاب کررہے تھے۔چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے کہا کہ تربیت کی تکمیل سے بہترریسرچ کرنے میں مدد ملے گی،کامیاب تربیت مکمل کرنے والے ریسرچر افسرمبارکباد کے مستحق ہیں،سپریم کورٹ کے مسٹرجسٹس سید منصور علی شاہ تقریب میں پہنچے توچیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ سردار محمد شمیم خان نے ان کا استقبال کیا،جسٹس سید منصور علی شاہ نے اپنے خطاب میں کہا کہ ججوں کو جانے کے بعد کوئی بلاتا نہیں،چلے جانے کے باوجود مجھے بلایا گیا اس پر خوشی ہے،جسٹس منصور علی شاہ نے مزید کہا کہ ججز میرٹ پرفیصلے کرتے ہیں،عدلیہ کو ججوں کی کمی کا سامنا ہے،وقت کی قلت کی وجہ سے جج خود ریسرچ نہیں کر سکتے،ریسرچرز عدلیہ کے مددگار ہیں۔تقریب میں لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس جوادحسن،جسٹس عاطر محمود،رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ ہمایوں امتیاز،ڈی جی ڈسٹرکٹ جوڈیشری اشتر عباس،پنجاب جوڈیشل اکیڈمی کے ڈی جی عبدالستار اورپنجاب کے لاء افسروں نے بھی شرکت کی۔

مزید : علاقائی


loading...