توانائی بحران کا خاتمہ‘ سولر انرجی پر توجہ کی ضرورت ہے‘ آفتاب اشرف

    توانائی بحران کا خاتمہ‘ سولر انرجی پر توجہ کی ضرورت ہے‘ آفتاب اشرف

ملتان (نیوز رپورٹر) پاکستان میں توانائی بحران کے باعث صنعتی شعبہ ان دنوں شدید مشکلات کا شکار ہے لہٰذا سولر انرجی پر بھرپور توجہ د ینا ہوگی تاکہ ملک میں صنعتی انقلاب لا یا جا سکے۔سولر ٹیوب ویل، پمپس‘ پنکھے،بلبز‘ بیٹریاں‘ چولہے اور سولر کاریں بنانے کی صنعتیں لگانا وقت ایک تقاضا ہے۔ گھریلو سطح پر(بقیہ نمبر47صفحہ7پر)

سولر پینل کی زیادہ سے زیادہ تنصیب کے لئے حکومت کو شہریوں کو آسان شرائط پر بلا سود قرضے فراہم کرنا ہوں گے، ڈیزل سے چلنے والے تمام ٹیوب ویلز کو سولر پمپس پر منتقل کرنے سے جہاں ڈیزل کی بچت ہو گی وہاں کسان کو ٹیوب ویل پر اٹھنے والے غیر ضروری اخراجات سے بھی نجات ملے گی اور زرعی پیداوار بھی سستی ہوں گی۔ان خیالا ت کا اظہار سولر انرجی ٹریڈ یونین آف پاکستان کے زیراہتمام گزشتہ روز”سولر انڈسٹری کو درپیش بحران اور اس کے حل کیلئے تجاویز“کے حوالے سے مقامی ہوٹل میں ایک منعقدہ تقریب میں مقررین نے کیا،اس موقع پر پاکستان بھر سے سولر انڈسٹری سے وابستہ تاجر حضرات نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔سولر انرجی ٹریڈ یونین آف پاکستان کے چیئرمین آفتاب اشرف نے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی جانب سے جاری ہونے والے ایس آر او کی وجہ سے گزشتہ تقریباً2ماہ کراچی پورٹ سے میٹریل نہیں نکل سکا جس کی وجہ سے سولر انڈسٹری شدید بحران کا شکار رہی۔ سولر انرجی ٹریڈ یونین آف پاکستان نے انڈسٹری کی بحالی کے لئے ہر ممکن کوشش کی ہے۔ حکومت کو ٹیکس اصلاحات کی وجہ سے سمال ٹریڈرز اور انسٹالرز کے تحفظات دور کرنے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کرنا ہوں گے۔ تعلیمی نصاب میں سولر انرجی کا خصوصی مضمون شامل کیا جائے کیونکہ اس کی تعلیم دینے سے پاکستان میں خوشحالی لائی جا سکتی ہے،بے روز گار نوجوانوں کو بھی سولر انرجی کے بارے میں فنی تربیت دے کرہنر مند نوجوانوں کو آسان شرائط پر بلا سود قرضے فراہم کئے جائیں تاکہ سولر سمال انڈسٹری کو فروغ دیا جاسکے۔ سولر انرجی ٹریڈ یونین آف پاکستان کے جنرل سیکرٹری میاں محمد شفیق نے کہا کہ سابقہ حکومتی ادوار میں بھی سولر انرجی کو فروغ دینے اور اس انڈسٹری سے وابستہ تاجر برادری کو ہرممکن سہولیات کی فراہمی کیلئے بلند وبانگ نعرے لگائے گئے لیکن عملاً کچھ نہ ہو سکا، اگرچہ موجودہ حکومت نے توانائی کے بحران کو اولین ترجیح دیتے ہوئے مختلف منصوبوں کا اعلان کیا ہے مگر یہ منصوبے ابھی تک کاغذوں تک محدود ہیں۔انہوں نے کہا کہ معاشی استحکام کیلئے حکومت بیرونی سرمایہ کاروں کو پاکستان لاکر مقامی سطح پر سولرپینلز کی تیاری کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کرے تاکہ سولر انڈسٹری کو بحران سے نکال کر وطن عزیز کو معاشی گرداب سے باہر نکالا جا سکے۔

آفتاب اشرف

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...