قتل کے مقدمہ میں جرم ثابت ہونے پر ملزم کو عمر قید ‘2بری

قتل کے مقدمہ میں جرم ثابت ہونے پر ملزم کو عمر قید ‘2بری

ملتان (خبر نگار خصوصی) ماڈل کورٹ ملتان نے فیملی دعویٰ میں گواہی دینے کی رنجش میں شہری کو گولی مار کر قتل کرنے کے مقدمہ میں ملوث ایک ملزم کو جرم ثابت ہونے پر عمر قید اور مقتول کے لواحقین کو دو لاکھ معاوضہ ادا کرنے کی سزا جبکہ دیگر 2 ملزمان کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے مقدمہ سے بری کرنے کا حکم دیا ہے۔فاضل عدالت میں ملزمان کی جانب سے کونسل باقر اعوان پیش ہوئے۔عدالت میں پولیس تھانہ شاہ رکن عالم کے مطابق ملزم طاہر فرید ، آفتاب رشید اور محمد محسن کے خلاف 11 نومبر 2018 میں(بقیہ نمبر43صفحہ12پر )

شہری محمد امین نے اپنے بھائی محمد سلیم کے قتل ہونے کا مقدمہ درج کرایا تھا جس میں ملزم طاہر فرید کو نامزد اور باقی 2 ملزمان کو نامعلوم ظاہر کیا گیا جو بعد میں شناخت کیے گئے تھے ملزمان کے خلاف الزام عائد کیا گیا کہ ملزم طاہر فرید نے اپنی بہن فاطمہ اور اسکے بہنوئی ذیشان کے مابین فیملی دعویٰ کے کیس میں گواہ بننے والے شخص محمد سلیم کو گھر کے باہر ہی تین فائر مار کر شدید زخمی کردیا تھا جو زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا تھا، تاہم گزشتہ سماعت میں فاضل عدالت نے تمام ثبوتوں اور گواہوں کی روشنی میں ملزم طاہر فرید کو عمر قید اور 2 لاکھ کا معاوضہ مقتول کے لواحقین کو ادا کرنے کی سزا اور رقم کی عدم ادائیگی کی صورت میں ملزم کو مزید چھ ماہ قید با مشقت کا حکم بھی جاری کیا گیا ہے جبکہ دیگر 2 ملزمان آفتاب رشید اور محمد محسن کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے مقدمہ سے بری کرنے کا حکم سنایا ہے۔

عمر قید

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...