پرویز مشرف نے وزیراعظم عمران خان کی حمایت کرتے ہوئے بیان جاری کر دیا

پرویز مشرف نے وزیراعظم عمران خان کی حمایت کرتے ہوئے بیان جاری کر دیا
پرویز مشرف نے وزیراعظم عمران خان کی حمایت کرتے ہوئے بیان جاری کر دیا

  


لندن (ویب ڈیسک) پاکستان کے سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف نے کہا ہے کہ بھارت نے 5 اگست غیر آئینی اقدامات اٹھائے اس پر پاکستان کو جارہانہ موقف اپنانا چاہیے۔ میں ک ئی سال بھارت سے مذاکرات کرتا رہا ہوں لیکن میں نے دیکھا کہ وہ بنیا ذہنیت رکھتا ہے اور شرافت کی زبان نہیں سمجھتا۔ میں نے اپنے دور میں ایسا بھی کہا تھا کہ ہم نے ایٹمی ہتھیار کھلونا بنا کر کھیلنے کے لئے نہیں بنائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے لندن میں آزاد کشمیر کے سابق وزیراعظم و پی ٹی آئی کشمیر کے صدر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری سے ایک گھنٹے کی تفصیلی ملاقات میں کیا۔ سابق صدر نے مزید کہا کہ یقینی طور پر میں اس چیز کے حق میں ہوں کہ ایٹمی ہتھیار استعمال نہیں ہونے چاہئیں۔ وزیر اعظم عمران خان کا کوئی متبادل نہیں وہی اس وقت پاکستان کی قیادت سنبھال سکتے ہیں۔ پاکستان کی فوج بھارت کی جارحیت کا جواب دینے کی بھرپور اہلیت اور صلاحیت رکھتی ہے۔ اس موقع پر بیرسٹری سلطان محمود چوہدری نے کہا کہ کشمیریوں کے جذبے بلند ہیں اور وہ پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ پوری دنیا میں کشمیری اب باہر نکل چکے ہیں، حکومت پاکستان بھی سفارتی محاذ پر اپنی پوری کوششیں کررہی ہے اور انشاءاللہ اس کے بہتر نتائج سامنے آئیں گے۔

مزید : برطانیہ


loading...