مطالبات تسلیم نہ ہوسکے: کمپیوٹرٹیچرز کا ایوان وزیراعلیٰ کے باہر احتجاج کا اعلان 

مطالبات تسلیم نہ ہوسکے: کمپیوٹرٹیچرز کا ایوان وزیراعلیٰ کے باہر احتجاج کا ...

  

 لاہور(لیڈی رپورٹر)پنجاب گورنمنٹ سکولز ایسوسی ایشن آف کمپیوٹر ٹیچرز (پیکٹ) پنجاب کے صوبائی صدر کاشف شہزاد چودھری نے  9ستمبر  کو وزیراعلی پنجاب کے دفتر8۔کلب روڈ کے باہر احتجاج کرنے کا اعلان کر دیا۔ آن لائن اجلاس میں پنجاب فزیکل ٹیچرز ایسوسی ایشن کے عہدیداران نے بھی شرکت اور احتجاج میں شمولیت کا اعلان کیا۔ انہوں نے اجلاس کے شرکاء کو بتایا کہ کمپیوٹر ٹیچرز اور دیگر اساتذہ کے متعدد امور ابھی تک زیر التوا ہیں۔ 13جولائی کو سیکرٹری سکولز اور 16 جولائی کو وزیر سکول ایجوکیشن پنجاب کے ساتھ میٹنگ میں ایک مرتبہ پھر انکے حل کے وعدے کئے گئے لیکن تاحال کوئی ایک مسئلہ بھی حل نہیں ہوا۔ گیارہ ہزار کے قریب کمپیوٹر سائنس اور دیگر تمام مضامین کے سکینڈری سکول ایجوکیٹرز / اے ای اوز بار بار وعدوں کے باوجود ابھی تک غیر مشروط مستقل نہیں ہو سکے۔ حد تو یہ ہے کہ 2011-12 میں بھرتی ہونے والے کئی اساتذہ ابھی تک ضلعی افسران کی نااہلی سے مستقل نہیں ہوسکے۔  14 سال گزرنے کے باوجود آج تک ای ایس ٹی کمپیوٹر سائنس سے ایس ایس ٹی کمپیوٹر سائنس اور ایس ایس ٹی کمپیوٹر سائنس  سے سبجیکٹ سپیشلسٹ کمپیوٹر سائنس  اور ہیڈ ماسٹر کا سروس سٹرکچر نہیں بنایا جا سکا۔

 اب وقت آ گیا ہے کہ مختلف محکموں کے درمیان تنخواہوں کی تفریق ختم کی جائے اور یکساں پے سکیل کا نفاذ کیا جائے اور تمام ایڈہاک ریلیف بنیادی تنخواہوں میں ضم کئے جائیں۔  پنجاب کے تمام کیڈرز کے اساتذہ کی بنیادی تعلیم باقی تمام صوبوں کے اساتذہ سے زیادہ ہے۔ پنجاب میں اساتذہ ماسٹر، ایم فل اور پی ایچ ڈی ہیں لیکن بدقسمتی سے پنجاب کے اساتذہ کی مراعات سب سے کم ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -