پالیسی تبدیل: ایف ایس سی امپروو  کرنے والے سٹوڈنٹس پریشانی سے دوچار 

 پالیسی تبدیل: ایف ایس سی امپروو  کرنے والے سٹوڈنٹس پریشانی سے دوچار 

  

 راجن پور (ڈسٹرکٹ رپورٹر) محکمہ تعلیم کی کوروناکی پابندیوں کے(بقیہ نمبر31صفحہ 5پر)

 دوران متعدد بار پالیسی کی تبدیلی سے ایف ایس سی امپروو کرنے والے طلباء وطالبات پریشا نی سے دوچار ہیں، کورو نا پابندی کے پہلے تین ماہ کے دوران ایسے طلباء وطالبات کوفسٹ پارٹ کے نمبرز کاتین فی صد دینے کااعلان کیا گیا اب انہیں خصوصی طلباء کہہ کر امتحان دینے کی پالیسی کااعلان کرکے طلباء وطالبات کوذہنی پریشا نی سے دوچار کیا گیا محکمہ تعلیم اس حوالے سے اپنی طے شدہ پالیسی پر نظر ثانی کرے‘ ضلع راجن پور میں ایف ایس سی کے مضا مین نمبرز امپروو کر نے والے طلباء وطالبات نے احتجاج کرتے ہوئے بتایا کہ حکو مت کی طرف سے کورونا وائرس کی پابندیوں کے دوران اعلان کیا گیا کہ طلباء کے امتحان کی بجائے اُنہیں اگلی کلاسز میں پروموٹ کیا جارہا ہے مضامین کے نمبرز امپروو کر نے والے طلباء کو فرسٹ پارٹ کے نمبرز سے بغیرامتحان لئے تین فی صد اضافی نمبرز دیئے جائیں گے جس سے اکیڈمیوں میں اور آن لائن تعلیم حاصل کرنے والے طلباء وطالبات نے ایف ایس سی مضامین کی بجائے انٹری ٹیسٹ کے امتحان کی تیاری شروع کردی اب تین ماہ کے بعد جب پی ایم ڈی سی کی جانب سے انٹری ٹیسٹ کی تاریخ کااعلان کیا گیا توایسے امپروو کرنے والے طلباء وطالبات کوخصوصی طلباء کہہ کراُن سے سپیشل امتحان لینے کااعلان کرکے طلباء کی ذہنی پریشانی میں اضافہ کردیا گیا ہے طلباء وطالبات کا کہنا ہے کہ جب مضامین کی تیاری کررہے تھے تو ایسے نمبرز دینے کااعلان کیا گیا جب تیاری چھوڑ کر انٹری ٹیسٹ کی تیاری کررہے ہیں اب امتحا ن کی باتیں کرکے ہماراقیمتی سال ضائع کرنے کی پالیسی تشکیل دے دی اُنہوں نے وزیراعظم پاکستان عمران خان، وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود اور ایجوکیشن بورڈز کے سربراہان سے مطا لبہ کیا ہے کہ حکو مت اپنی تعلیمی پالیسی پر نظر ثانی کرتے ہوئے اضافی نمبرز دے یاانٹری ٹیسٹ دسمبر میں لیا جائے تاکہ طلباء ذہنی طور پرتیار ہوسکیں۔

دوچار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -