مہمند،غلنئی ہال میں مہمند  وکلاء بار کی حلف برداری 

مہمند،غلنئی ہال میں مہمند  وکلاء بار کی حلف برداری 

  

ضلع مہمند(نمائندہ پاکستان)غلنئی جرگہ ہال میں مہمند وکلاء بار ایسوسی ایشن کا حلف برداری تقریب کا انعقاد۔نیا کابینہ تشکیل۔ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج محمد آمین جان کنڈی نے گیارہ رکنی کابینہ سے حلف لیا۔ پروگرام میں خیبر پختونخواہ بار کونسل کی وائس چیئرمین شاہد ملک،یواین ڈی پی خیبر پختونخواہ کے لیگل ایڈوائیزر خوشنود ذاکراللہ،اے سی بائیزئی عبدالوہاب خلیل،ڈی ایس پی لیاقت علی،ڈسٹرکٹ کورٹ جج صاحبان اور بارایسوسی ایشن کے وکلاء کی شرکت۔نئے کابینہ میں گل رحمان مہمندصدر، حبیب اللہ نائب صدر، رضاخان صافی جنرل سیکرٹری،ولی خان مہمندپریس سیکرٹری، مصور شاہ فنانس،گل بشر جائنٹ سیکرٹری اورمحسن خان مہمند لائبریری سیکرٹری منتخب ہوئے۔جبکہ عمرفاروق مہمند،صالح رضا صافی،ذاہدخان اور اسرار الدین کابینہ کے دوسرے ممبران چن لیا۔تفصیلات کے مطابق غلنئی جرگہ ہال میں مہمند وکلاء بار ایسوسی ایشن کے نئے منتخب شدہ کابینہ ممبران کا حلف برداری تقریب کا اہتمام ہوا۔تقریب کے مہمان خصوصی محمد آمین جان کنڈی نے نئے کابینہ ممبران صدر گل رحمان،نائب صدر حبیب اللہ،جنرل سیکرٹری رضا خان،پریس سیکرٹری ولی خان مہمند،فنانس مصور شاہ،جائنٹ سیکرٹری گل بشر اور لائبریری،سیکرٹری محسن خان مہمند،عمر فاروق،صالح خان،ذاہداللہ،اور اسرار الدین سے حلف لیا۔ پروگرام میں کے پی بار کونسل کے وائس چیئرمین ملک شاہد خان،یو این ڈی پی لیگل ایڈوائیزر بی بی خوشنود ذاکر اللہ،اے سی بائیزئی عبدالوہاب خلیل،ڈسٹرکٹ جج صاحبان اور وکلاء با ر ایسوسی ایشن کے ممبران نے شرکت کی۔حلف برداری تقریب سے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج محمد آمین جان کنڈی نے کہا۔کہ قبائلی اضلاع میں عوام عدالتی نظام سے واقف نہیں۔اس لئے بار اور بنچ عوام کے ساتھ نرمی سے پیش آئے۔انہوں نے نئے منتخب کابینہ کو مبارک باد پیش کی۔اس موقع پر مہمند وکلاء بار ایسوسی ایشن کے نئے صدر گل رحمان مہمندنے کہا۔کہ ہم مختلف مسائل کے شکار ہیں۔کیونکہ وکلاء بار کیلئے تاحال کوئی بار روم موجود نہیں۔اور ساتھ دوسرے ضروریات درپیش ہے۔جبکہ یواین ڈی پی کے فراہم کردہ فرنیچر کیلئے ہمارے ساتھ کوئی جگہ موجود نہیں۔جوکہ فرنیچرکو محفوظ رکھنے کیلئے ہم نے پرائیوٹ جگہ میں رکھاہے۔انہوں نے کہاکہ ڈسٹرکٹ کورٹ اور پولیس فورس میں زنانہ اہلکار موجود نہیں۔اورعلاقے کے زمین کا لینڈ ریوینیو ریکارڈ موجود نہیں۔جن سے وکلاء گوں ناگوں مسائل کا شکار ہیں۔جبکہ بار غریب،بیوہ،یتیم،خوجہ سرا اور تنگدست لوگوں کو جن کے ساتھ وکیل وغیرہ کا فیس موجود نہ ہو۔تو بار ایک فارم کے ذریعے یواین ڈی پی سے فیس فراہم کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا۔کہ حکومت کے طرف سے ہمارے ساتھ کوئی تعاون نہیں۔جبکہ نئے ضم شدہ اضلاع کو خصوصی توجہ کی ضرورت ہیں۔کہ عوام انضمام کے ثمرات سے مستفید ہوسکے۔ اس موقع پر جنرل سیکرٹری رضا ء خان نے کہا۔کہ وکلاء بار کا مقصد وکلاء کو درپیش مسائل کا حل کرنا ہیں۔تقریب کے آخر میں یو این ڈی پی کے لیگل ایڈوائیزر بی بی خوشنود ذاکراللہ نے اخباری نمائندوں کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ یواین ڈی پی کا قبائلی کورٹس کیساتھ تعاون جاری ہیں۔جن میں مہمند ڈسٹرکٹ کورٹ اور بار کو فرنیچر فراہم کیا۔اور خیبراور باجوڑ ضلع کو لائبریری فراہم کرنے کے بعدآئندہ ماہ مہمند ڈسٹرکٹ کورٹ کو بھی لائبریری دینگے۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -