مہرباں ہو کے بلا لو مجھے ، چاہو جس وقت

مہرباں ہو کے بلا لو مجھے ، چاہو جس وقت
مہرباں ہو کے بلا لو مجھے ، چاہو جس وقت

  

مہرباں ہو کے بلا لو مجھے ، چاہو جس وقت

میں گیا وقت نہیں ہوں ‌کہ پھر آ بھی نہ سکوں

ضعف میں طعنۂ اغیار کا شکوہ کیا ہے

بات کچھ سر تو نہیں ہے کہ اٹھا بھی نہ سکوں

زہر ملتا ہی نہیں مجھ کو ستمگر، ورنہ

کیا قسم ہے ترے ملنے کی کہ کھا بھی نہ سکوں

Mehrabaan Ko Bulaa Lo Mujhay Chaahay Jiss Waqt

Main Gia Waqt Nahen Hun Keh Phir Aa Bhi Na Sakun

Zoaf  Men taana e Aghyaar Ka Shikwa Kaya

Baat Kuch Sar To nahen Hay Keh Uthaa Bhi Na Sakun

Zehr Milta Hi Nahen Mujh Ko Sitamgar Warna

Kaya Qasam hay Tiray Milnay Ki Keh Khaa Bhi Na Sakun

Poet:Mirza Ghalib

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -