دونوں جہان دے کے وہ سمجھے یہ خوش رہا

دونوں جہان دے کے وہ سمجھے یہ خوش رہا
دونوں جہان دے کے وہ سمجھے یہ خوش رہا

  

دونوں جہان دے کے وہ سمجھے یہ خوش رہا

یاں آ پڑی یہ شرم کہ تکرار کیا کریں

تھک تھک کے ہر مقام پہ دو چار رہ گئے

تیرا پتہ نہ پائیں تو ناچار کیا کریں؟

کیا شمع کے نہیں ہیں ہوا خواہ اہلِ بزم؟

ہو غم ہی جاں گداز تو غم خوار کیا کریں؟

شاعر: مرزا غالب

Dono Jahaan Day  k Wo Yeh Samjhay main Khush Raha

Yaan Aa Parri Yeh Sharm Keh Takraar Kaya Karen

Tahk Thak k Har Muqaam Pe  Do Chaar Reh Gaey

Tera Pata Na Paaen To Nachaar Kaya Karen

Kaya Shama KNahen Hen Hawa Khaah Ehl e Karam

Ho Gham Hi Jaan Gudaaz To Gham Khaar Kaya Karen

Poet: Mirza Ghalib

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -