وہ آئیں گھر میں ہمارے خدا کی قدرت ہے

وہ آئیں گھر میں ہمارے خدا کی قدرت ہے
وہ آئیں گھر میں ہمارے خدا کی قدرت ہے

  

یہ ہم جو ہجر میں دیوار و در کو دیکھتے ہیں

کبھی صبا کو کبھی نامہ بر کو دیکھتے ہیں

وہ آئیں  گھر میں ہمارے خدا کی قدرت ہے

کبھی ہم ان کو کبھی اپنے گھر کو دیکھتے ہیں

نظر لگے نہ کہیں اُس کے دست و بازو کو

یہ لوگ کیوں مرے زخمِ جگر کو دیکھتے ہیں

ترے جواہرِ طرفِ کُلہ کو کیا دیکھیں

ہم اوجِ طالعِ لعل و گہر کو دیکھتے ہیں

شاعر: مرزا غالب

Yeh Ham Jo Hijr Men Dewaar o Dar Ko Dekhtay Hen

Kabhi Sabaa Ko , Kabhi Naama Bar Ko Dekhtay Hen

Wo Aaey Ghar Men Hamaaray Khuda Ki Qudrat Hay

Kabhi Ham Un Ko Kabhi Apnay Ghar Ko Dekhtay Hen

Nazar Lagay Na Kahen Uss K Dast e Baazu Ko 

Yeh Log Kiun Miray Zakhm e Jigar Ko Dekhtay Hen

Tiray Jawaahir e Taraf e Kulkah Ko Kaya Dekhen

Ham Aoj e Taalay  e  Laal o Gohar Ko Dekhtay Hen

Poet: Mirza Ghalib

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -