لیفٹیننٹ ناصر خالد شہید کی  بہادر اور عظیم والدہ نے "یوم دفاع" کے موقع پر ایسی بات کہہ دی کہ آنسوؤں کا روکنا مشکل ہو جائے گا 

لیفٹیننٹ ناصر خالد شہید کی  بہادر اور عظیم والدہ نے "یوم دفاع" کے موقع پر ...
لیفٹیننٹ ناصر خالد شہید کی  بہادر اور عظیم والدہ نے

  

مظفر آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)شمالی وزیرستان میں بارودی سرنگ پھٹنے سے شہید ہونے والے22 سالہ لیفٹیننٹ ناصر خالد کی  بہادر اور عظیم والدہ نے "یوم دفاع" کے موقع پر ایسی بات کہہ دی کہ  ہر کسی کی آنکھوں سے آنسو بہنا شروع ہو جائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز قبل شمالی وزیرستان میں بارودی سرنگ پھٹنے سے شہید ہونے والے22 سالہ لیفٹیننٹ ناصر خالد  کی والدہ نے اشکبار آنکھوں کے ساتھ  کہا ہے کہ جب ہم اپنے بچوں کو ملک کی خاطر فوج میں بھیجتے ہیں تو اللہ کے سپرد کرتے ہیں ،اللہ ہی ذات ہے جو بہترین حفاظت کرنے والی ہےاور شہادت دینے والی ذات بھی اللہ کی ہے۔انہوں نے کہا کہ مجھے فخر ہے کہ میرے بیٹے نے ملک کی حفاظت کرتے ہوئے بہادری سے لڑتےہوئے اپنی جان قربان کی ،میرا دوسرا بیٹا بھی پاک فوج میں ہے ، اگر میرے 50 بیٹے بھی ہوتے تو میں انہیں ملک کی حفاظت پر قربان کر دیتی۔انہوں نے کہا کہ جب آپ کے جگر اور دل کا ٹکڑا جدا ہوتا ہے تو ظاہری سی بات ہے  دکھ اور غم کی شدت بہت بڑھ جاتی ہے،یہ ایمان کی طاقت ہی ہے جو اتنے بڑھے غم میں آپ کو حوصلہ اور صبر دیتی ہے،اللہ تعالیٰ نے میرے بیٹے کو اعلیٰ مقام دیا ہے اور اس نے اپنے ملک کے لئے لڑتے ہوئے جام شہادت نوش کیا ہے،الحمد اللہ میرا بیٹا بہت بہادر اور انتہائی لائق تھا ،17 سال کی عمر میں وہ آسٹریلیا گیا وہاں فوجی اکیڈمی سے پاس ہوا ،اللہ تعالی نے میرے بیٹے کو عظیم رتبہ دیا ہے ،میں اپنے بیٹے کی شہادت پر پریشان نہیں ہوں لیکن اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ ناصر کی کمی پوری نہیں ہو سکتی۔انہوں نے کہا کہ میرے دو بیٹے اور ایک بیٹی ہے اور میرے تمام بچے ہی وطن کی محبت سے سرشار ہیں۔

مزید :

دفاع وطن -