خیبر کے پرائیویٹ سکولوں کی ٹرانسپورٹ فیس 

خیبر کے پرائیویٹ سکولوں کی ٹرانسپورٹ فیس 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 خیبرپختونخوا میں ایک طرف تو بارشوں اور سیلاب نے تباہی مچا رکھی ہے تو دوسری جانب مہنگائی نے رہی سہی کسر پوری کر دی ہے اور اشیائے صرف کے نرخ شہریوں کی پہنچ سے دور ہوتے جا رہے تھے۔ تازہ خبر یہ آئی ہے کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کے بعد پرائیویٹ سکولوں نے ٹرانسپورٹ فیس میں 80 فیصد تک اضافہ کردیا  ہے۔صوبائی دارالحکومت پشاور کے مختلف شہری اور نواحی علاقوں کے چھوٹے بڑے نجی سکولوں نے یکم ستمبرسے ٹرانسپورٹ فیس بڑھا دی ہے،  جبکہ سوزوکی پک اپ اور ویگن گاڑیوں نے ٹرانسپورٹ فیس میں کم و بیش 50فیصد تک اضافہ کر دیا  ہے تاہم مذکورہ تعلیمی اداروں نے اپنی گاڑیوں کی حالت کو تبدیل نہیں کیا اورکئی ایک ایسی خستہ حال ہیں کہ کسی وقت بھی حادثے کا شکار ہو سکتی ہیں،ان گاڑیوں میں ائیر کنڈیشنڈ اور ہیٹرز کی بھی سہولت میسر نہیں جبکہ اکثر اوقات یہ گاڑیاں سڑکوں پر خراب ہو جاتی ہیں اور بچوں کو متبادل گاڑیوں میں پک اینڈ ڈراپ لینا پڑتا ہے۔ پشاور اور کئی دیگر اضلاع کے بیشتر پرائیویٹ سکولوں کے پاس پرانے ماڈل اور ٹوٹی پھوٹی گاڑیاں ہیں جن میں کئی مرتبہ آتشزدگی کے واقعات بھی رونما ہو چکے ہیں، گزشتہ دنوں سوات میں ایک سکول کی خستہ حال گاڑی کے حادثے میں پانچ سے زائد طلباء  جاں بحق ہوگئے تھے جس کے بعد صوبائی حکومت نے پرانی گاڑیوں پر پابندی عائد کر دی تھی تاہم پشاور میں اس پر عمل درآمد نہیں ہو رہا ہے۔ٹرانسپورٹ فیس کی مد میں کئے جانے والے حالیہ اضافے پر والدین سخت پریشانی میں مبتلا ہیں  جنہوں نے وزیراعلیٰ محمود خان سمیت محکمہ تعلیم کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس کا فوری نوٹس لیں اور ناجائز اضافہ واپس کرائیں۔

مزید :

رائے -اداریہ -