پاک فوج میں عمران خان کے بیان پر شدید غم و غصہ

      پاک فوج میں عمران خان کے بیان پر شدید غم و غصہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


        راولپنڈی(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں) پاک فوج کے  شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے کہا ہے کہ فیصل آباد میں ہونے والے سیاسی جلسے کے دوران چیئرمین پی ٹی آئی کی جانب سے پاک فوج کی سینئر قیادت کے بارے میں ہتک آمیز اور انتہائی غیر ضروری بیان پر پاکستان آرمی میں شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے، ایک ایسے وقت میں پاک فوج کی سینئر قیادت کو متنازع بنانے کی کوشش انتہائی افسوس ناک ہے جبکہ پاک فوج قوم کی سیکیورٹی اور حفاظت کے لیے ہر روز جانیں قربان کر رہی ہے،آرمی چیف کی تعیناتی کا آئین میں واضح طریقہ کار موجود ہے اس کے باوجود سینئر سیاست دانوں کی جانب سے اس عہدے کو متنازع بنانے کی کوشش انتہائی افسوس ناک عمل ہے، پاک فوج کی سینئر لیڈر شپ کی اہلیت اور حب الوطنی، ان کی دہائیوں پر محیط بے داغ اور شاندار عسکری خدمات سے عیاں ہے، پاک فوج کی اعلی قیادت کو سیاست میں ملوث کرنے کی کوشش اور آرمی چیف کی تعیناتی کے طریقہ کار کو متنازع بنانا نہ پاکستان کے مفاد میں ہے اور نہ ہی پاک فوج کے مفاد میں ہے، پاکستان آرمی اسلامی جمہوریہ پاکستان کے آئین کی بالادستی کے عزم پر قائم ہے ،مسلح افواج اسلامی جمہوریہ پاکستان کے آئین کی بالادستی کے عزم پر قائم ہیں، پاک فوج میرٹ پر یقین رکھتی ہے،میرٹ کی بات کی جائے تو اسے بہترین ادارہ کہاجاتا ہے،پاک فوج صرف بہترین کو فروغ دیتی ہے،پاک فوج میں جانبداری کا کوئی تصور نہیں۔پیر کو پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر)کی جانب سے فیصل آباد میں چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان کے پاک فوج سے متعلق بیان پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے تے ہوئے کہا گیاہے  کہ سینئر قیادت کیلئے غیر ضروری اور ہتک آمیز بیان پر پاک فوج میں غم و غصہ ہے،پاک فوج قوم کی سیکیورٹی اور حفاظت کیلئے ہر روز اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرتی ہے،ایسے وقت میں پاک فوج کی سینئر قیادت کو متنازع بنانے کی کوشش انتہائی افسوسنا ک ہے،سینئر سیاستدانوں کی اس عہدے کو متنازع بنانے کی کوشش انتہائی افسوسنا ک ہے،آئین میں آرمی چیف کی تعیناتی کا واضح طریقہ کار موجود ہے۔آئی ایس پی آر  کے مطابق پاک فوج کی سینئر لیڈ ر کی عسکری خدمات شاندار اور بے داغ ہے،پاک فوج کی سینئر لیڈر شپ کی اہلیت اور حب الوطنی دہائیوں پر محیط ہے،پاک فوج کی قیادت سیاست میں ملوث کرنے کی کوشش ملکی مفاد میں نہیں ہے،آرمی چیف کی تعیناتی کو متنازع بنانا پاک فوج کے مفاد میں بھی نہیں ہے،مسلح افواج اسلامی جمہوریہ پاکستان کے آئین کی بالادستی کے عزم پر قائم ہے۔آئی ایس پی آر کے مطابق پاک فوج میرٹ پر یقین رکھتی ہے،میرٹ کی بات کی جائے تو اسے بہترین ادارہ کہاجاتا ہے،پاک فوج صرف بہترین کو فروغ دیتی ہے،پاک فوج میں جانبداری کا کوئی تصور نہیں ہے،سپاہی کا  بیٹا آرمی چیف  ہوسکتا ہے اور جنرل کا بیٹا بھی منتخب نہیں ہو سکتا،پاک فوج قومی فوج کی حقیقی عکاس ہے،جہاں رنگ و نسل یا قبیلے کی کوئی گنجائش نہیں  ہے۔آئی ایس پی آر کی جانب سے مزید کہا گیا کہ ایک کورس سے صرف ایک اور 2افسران لیفٹیننٹ جنرل کے عہدے پر پہنچتے ہیں جو سخت ترین اسکریننگ اور کلیئرنس سے گزرتے ہیں،فوج انفرادی ترجیحات کے بجائے آئین پاکستان کی پابند ہے،آرمی چیف پاکستان اور پاک فوج کے ہیں،اسے چند لوگوں یا پارٹی سے جو ڑنا بدقسمتی ہے،پاکستانی فوج قومی اور پاکستان کے عوام کی فوج ہے۔
ترجمان پاک فوج

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)  صدر مملکت عارف علوی نے کہا ہے کہ آرمی چیف سمیت پوری فوج محب وطن ہے، عمران خان اپنی بات کی خود وضاحت کریں۔صدر مملکت نے گورنر ہاؤس پشاور میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آرمی چیف سمیت پوری فوج محب وطن ہے کسی کی حب الوطنی پر شک نہیں کرنا چاہیے، عمران خان نے آرمی چیف کے حوالے سے جو بات کی وہ خود وضاحت کریں، میں کوئی کنفیوڑن پیدا نہیں کرنا چاہتا، جو بھی بات کرے ضروری ہے کہ وہ خود ہی اس کی وضاحت بھی کرے۔عارف علوی نے کہا کہ میں قومی حکومت کے قیام کی کوشش نہیں بلکہ سب کو ایک ساتھ بٹھانا چاہتا ہوں، اس کام میں کامیابی کے لیے پرامید ہوں، وزیراعظم سے ملاقات ہوتی رہتی ہے، اگر رابطہ نہیں ہے تو فاصلے بھی نہیں، شفافیت آجائے تو صوبوں کے مابین بداعتمادی ختم ہوجائے گی۔صدر مملکت نے کہا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ بہتر ڈیل ہے، پاکستان معاشی دباؤ سے نکل آیا ہے، دیگر ادارے بھی اب تعاون کریں گے، دعا ہے کہ مہنگائی جلد ختم ہوجائے۔ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ سوشل میڈیا ایک جانور ہے جسے زیادہ اہمیت نہیں دینی چاہیے اس کے ساتھ گزارا کرنا ہوگا، یہ ریگولیٹ نہیں ہوسکتا، جو کوئی بھی بات کرے احتیاط سے بات کرے۔صدر مملکت نے مزید کہا کہ لوگوں کے فون ٹیپ کرنا خطرناک ہے، تاہم ایسا دنیا بھر میں ہوتا ہے، میں ای ووٹنگ کا حامی ہوں، میں نے اس سلسلے میں کافی کام کیا ہے۔دوسری طرف  حکومتی اتحاد میں شامل جماعتوں نے عمران خان کے فوج مخالف بیانات کی شدید مذمت کی ہے، پی ڈی ایم کے مشترکہ بیان میں کہا گیا کہ مسلح افواج سمیت قومی اداروں اور ان کی قیادت کے آئینی احترام اور حدود کی پاسداری کو یقینی بنایا جائے گا، سازشی عناصر کو آئین اور قانون کے مطابق نمٹیں گے، پاکستان کو کمزور کرنے کے ہر مذموم ایجنڈے کو ناکام بنائیں گے۔حکومتی اتحاد میں شامل جماعتوں کی جانب سے مشترکہ بیان کے مطابق عمران خان نے جلسے میں افواج پاکستان اور اس کی قیادت کیخلاف نفرت پھیلانے اور حساس پیشہ وارانہ امورکو متنازعہ بنایا، پوری قوم سیلاب سے لڑ رہی ہے، نفرت، انتقام اور تکبر میں ڈوبا عمران خان مسلح افواج سمیت قومی اداروں اور عوام سے لڑرہا ہے۔مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ سنگین بہتان تراشی کا مقصدمعاشی بحالی کے عمل کو متاثر کر کے پاکستان کو سری لنکا بنانا اورعوام کو فوج سے لڑانا ہے، الزامات کا مقصد فوج کے  رینک اینڈ فائل  میں تصادم کی راہ ہموار کرنا ہے، آئین اور قانون کی طاقت سے اس مذموم سازش کو ناکام بنائیں گے۔حکمران اتحاد نے کہا کہ سازشیوں سے آئین اور قانون کے مطابق نمٹیں گے، پاکستان آئین کے مطابق چلے گا، پاکستان کو کسی فرد واحد کے تکبر، فسطائیت اور آمرانہ رویوں کا غلام بنانے کی اجازت نہیں دی جاسکتی، مسلح افواج ملک میں سیلاب متاثرین کی مدد کی قابل قدر خدمات انجام دے رہی ہیں۔حکومتی اتحاد نے کہا کہ مسلح افواج دہشتگردی کیخلاف جرات وبہادری اور دلیری سے جنگ لڑرہی ہیں، اس جنگ میں فوج کے افسر اور جوان جام شہادت نوش کررہے ہیں، پوری قوم دہشتگردی سے نجات، معاشی استحکام، سیلاب متاثرین کی مدد اور بحالی کے ایجنڈے پر متحد اور ایک آواز ہے، ایک تنہا آواز ہر روز قومی اتحاد کو پارہ پارہ کرنے کے لئے جھوٹ، پراپیگنڈے اور بہتان تراشی کے ذریعے مسلسل نفرت پھیلا رہی ہے، معیشت کی بحالی سمیت قومی مفادات کے تحفظ کا عمل متاثرنہیں ہونے دینگے۔سابق صدر آصف علی زرداری  نے کہا  ہے کہ ہمارے سپاہی سے لیکر پاک فوج کے جرنیل تک ہر ایک بہادر اور محب وطن ہے۔ عمران خان کے گزشتہ روز کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے آصف علی زرداری نے کہا کہ ساری قوم کو نظر آرہا ہے کہ اس قوم کا فتنہ کون ہے، آج سب کو انسان اور حیوان کا پتہ چل گیا ہے۔ آصف زرداری نے مزید کہا کہ عمران خان نے ملک کو کمزور کرنے کا کہیں سے ٹھیکہ لیا ہوا ہے جو ہمارے جیتے جی مکمل نہیں ہو سکتا، ہم اداروں اور جرنیلوں کو اس شخص کی ہوس کی خاطر متنازع نہیں بننے دیں گے، ہمارے ہر سپاہی سے لیکر جرنیل تک ہر ایک بہادر اور محب وطن ہے۔ سابق صدر کا کہنا تھا کہ پوری قوم اس وقت سیلاب زدگان کے ساتھ کھڑی ہے، قوم سیلاب زدگان کی مدد کرنے کی کوشش کر رہی ہے اور یہ شخص جلسہ جلسہ کھیل رہا ہے، خیبر پختونخوا اور پنجاب میں بھی صرف وفاقی حکومت نظر آ رہی ہے، خیبرپختونخوا اور پنجاب کی صوبائی حکومتیں صرف جلسوں کی تیاریوں میں مصروف ہیں۔
صدر مملکت

مزید :

صفحہ اول -