بھارت کے خلاف میچ میں محمد نواز کو کیا سوچ کر اور کیا کہہ کر پچ پر کھیلنے بھیجا تھا ؟ بابراعظم نے اندر کی بات بتا دی 

بھارت کے خلاف میچ میں محمد نواز کو کیا سوچ کر اور کیا کہہ کر پچ پر کھیلنے ...
بھارت کے خلاف میچ میں محمد نواز کو کیا سوچ کر اور کیا کہہ کر پچ پر کھیلنے بھیجا تھا ؟ بابراعظم نے اندر کی بات بتا دی 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )قومی ٹیم کے کپتان بابراعظم نے وکٹ کیپر بیٹر محمد رضوان کی صحت سے متعلق آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ محمد رضوان کو مانیٹر کیا جارہاہے وہ بہتر محسوس کر رہے ہیں ، محمد رضوان کا سٹی سکین کرایا جارہاہے تاکہ مزید جائزہ لیا جا سکے ،محمد رضوان انجری کے ہوتے ہوئے کھیل رہے ہیں اور پرفارمنس دے رہے ہیں ،محمد رضوان کی ایم آر آئی ہوئی ہے۔ 
قومی ٹیم کے کپتان بابراعظم نے بھارت کے خلاف میچ میں شاندار کامیابی کے تجربات سے شائقین کرکٹ کو آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ "بھارت کے خلاف میچ کھیلنے کے بعد ہمارا مورال بلندہوا ،ہمارا پلان ہے کہ جس مومینمٹم میں چل رہے ہیں وہی لے کر اگلے میچز پر چلیں ، خوشی ہوتی ہے کہ کوئی نہ کوئی کھلاڑی پرفارمنس دے رہاہے ،خوشی ہوتی ہے کہ ہر میچ میں مختلف مین آف دی میچ آ رہے ہیں ،میں آؤٹ ہوتا ہوں تو رضوان بہترین پرفارمنس دے رہے ہیں لوئر آرڈر کو پرفارمنس میں تھوڑی مشکل تھی لیکن اب پر فارمنس آنا شروع ہو گئی ہے "۔
بھارت کے خلاف میدان میں اپنائی گئی سٹریٹجی سے پردہ اٹھاتے ہوئے بابراعظم نے بتایا کہ محمد نواز کو کہا تھا اپنی گیم کھیلیں اور بغیر کسی پریشرکے کھیل رہے ہیں، لیفٹ رائٹ کمبی نیشن کی وجہ سے بھارت کو مشکل پیش آئی محمد نواز کو لیفٹ ہینڈ بیٹر کے طور پر بھیجا اس نے پلان کے مطابق کھیل پیش کیا ،محمد نواز کو بیٹنگ اس نمبر پر مل نہیں رہی تھی لیکن جب ملی تو اچھا پر فارم کیا ۔
انہوں نے کہا کہ ایشیا ءکپ ٹرافی بولنے سے نہیں جیتی جاتی کوشش اور محنت کرنا پڑے گی،ٹی ٹوینٹی کی خوبصورتی ہے کہ کسی بھی بولر پر اٹیک ہو سکتا ہے ،ہمارے بولنگ یونٹ نے اچھا اٹیک کیا اور اچھا کم بیک کیا ،محمد رضوان ورلڈ کپ میں ہسپتال رہ کر آیا اس کا جذبہ دیکھ کر خوشی ہوئی، رضوان نے کہا تھا پاکستان کیلئے کھیلنا ہے ،مجھے خوشی ہوتی ہے کہ میرے پاس رضوان جیسے واریئرز ہیں،اپنے اوپر پورا یقین ہے کہ جہاں میرا جتنا لکھا ہے وہ ملنا ہے ،ہمارے کھلاڑی اپنی ذمہ داری بھر پور طریقے سے اپنے اوپر لے رہے ہیں ،کپتان ہونے کے ناطے جب ذمہ داری آتی ہے تو اس کو اچھے طریقے سے نبھانا چاہیے ،اپنے کھلاڑیوں کو جو بھی پلان دیتاہوں وہ بخوبی اس پر عمل کرتے ہیں ، کپتان ہونے کے ناطے بہت کچھ سیکھا ہے ، سیکھنے کا عمل ہر وقت جاری رہتاہے ۔

مزید :

کھیل -