ایک طرف سیلاب کی تباہ کاریاں دوسری طرف جلسے جلوس, قوم کو سمجھ جانا چاہیے:" ایشو آف دی ڈے " میں سیاسی رہنما بول پڑے

ایک طرف سیلاب کی تباہ کاریاں دوسری طرف جلسے جلوس, قوم کو سمجھ جانا چاہیے:" ...
 ایک طرف سیلاب کی تباہ کاریاں دوسری طرف جلسے جلوس, قوم کو سمجھ جانا چاہیے:

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور ( جاوید اقبال ، شہزاد ملک سے ) جے یو آئی (ف) کے مرکزی رہنما حافظ  حمد اللہ نے کہا ہے کہ جب آپکے ملک کے چاروں صوبوں کی عوام کا ایک بڑا حصہ سیلاب کی تباہ کاریوں کا شکار ہو جائے اور آپ اسی ملک کے سابق وزیر اعظم بھی رہے ہوں اور موجودہ دور میں بھی آپکے 2 اہم صوبوں میں صوبائی حکومتیں ہوں اور آپ اپنی ان صوبائی حکومتوں کے شانہ بشانہ ملکر اپنے عوام کی امداد کرنے کی بجائے جلسے جلوس کرنے کو ترجیح دیں تو پھر قوم کو سمجھ جانا چاہئے کہ ایسے شخص کو اپنی ذات کے علاوہ کسی اور چیز میں دلچسپی نہیں۔وہ روزنامہ "پاکستان " سے "ایشو آف دی ڈے "میں اظہار خیال کررہے تھے،ان کا کہنا تھا کہ یہ لاڈلہ اپنے کھیلنے کے لیئے وزیر اعظم کی کرسی چاہتا ہے اور جب اس کی ناکامیوں کی وجہ سے اس شخص کو ایک کامیاب عدم اعتماد کی تحریک کے نتیجے میں کرسی سے اتار دیا گیا تو تب سے ہی یہ شخص اپنے ہوش و حواس کھو بیٹھا ہے۔

" ایشو  آف دی ڈے " میں گفتگو کرتے ہوئے اے این پی کے مرکزی رہنما غلام احمد بلور نے کہا ہے کہ جلسہ،جلسہ کھیلنے کے لیئے تو بعد میں بھی ٹائم مل جائے گا موجودہ وقت سیاسی نظریاتی اختلافات کوایک طرف رکھ کر صرف اور صرف سیلاب زدگان کی دل کھول کر امداد کرنے کا ہے اگر کوئی شخص اس صورت حال میں بھی جلسوں کا شوق پورا کررہا ہے تو پھر عوام کو ایسے غیر سنجیدہ آدمی کے بارے میں سوچنا چاہیے۔ہم امید کرتے ہیں کہ ایسے بے حس شخص سے باشعور عوام الیکشن میں ضرور بدلہ لیں گے۔

" ایشو  آف دی ڈے " میں گفتگو کرتے ہوئےمسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما طلال چودھری نے کہا ہے کہ افسوس کی بات ہے کہ جس شخص کی پنجاب اور کے پی میں حکومت ہے وہ ان صوبائی حکومتوں کے ساتھ ملکر اپنے متاثرہ بہن بھائیوں کی امداد کی بجائے ان صوبوں کے وزرائے اعلیٰ سے اپنے لیئے جلسے منعقد کروارہا ہے اس صورت حال میں اقتدار کا بھوکا شخص متاثرین کے زخموں پر نمک پاشی کررہا ہے اس کے جلسوں پر فوری پابندی لگنی چاہیے۔

" ایشو  آف دی ڈے " میں گفتگو کرتے ہوئےپیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما چودھری منور انجم نے کہا ہے کہ اگر اس بد ترین سیلاب کی تباہ کاریوں میں بھی ایک شخص محض اسلام آباد پر چڑھائی کرنے کیلئے اور اپنی کرسی کی ہوس پوری کرنے کے لیئے جلسے جلوس کررہا ہے تو ایسے شخص کا محاسبہ یقینی طور پر باشعور عوام ضرور کریں گے مگر اس شخص نے اس صورت حال میں بھی جلسے جلوس کرکے بتا دیا ہے کہ اس کو عوام کے مسائل سے کوئی دلچسپی نہیں ۔