معاشرتی مسائل کی عکاس ڈرامہ سیریل’’کوئی عشق نہ جانے‘‘

معاشرتی مسائل کی عکاس ڈرامہ سیریل’’کوئی عشق نہ جانے‘‘

حسن عباس زیدی

یامین ملک کا شمار ہمارے ملک کے چند پروفیشنل پروڈیوسرز میں کیا جاتا ہے وہ اب تک لاتعداد کامیاب ڈرامے پروڈیوس کرچکے ہیں ان کے ڈراموں کی خاص بات کرداروں کے مطابق فنکاروں کا انتخاب ہوتا ہے ۔انہوں نے کبھی کام کے معاملے میں سفارش کو نہیں مانا کیونکہ وہ کہتے ہیں کہ سفارش سے کام ہمیشہ خراب ہوتا ہے ۔ان کی نئی ڈرامہ سیریل’’کوئی عشق نہ جانے ‘‘ان دنوں زیر تکمیل ہے جس میں ملک کے معروف فنکار کام کررہے ہیں۔معاشرتی مسائل کی عکاس ڈرامہ سیریل’’کوئی عشق نہ جانے‘‘کے نمایاں فنکاروں میں ریشم،شامل خان،عثمان پیرزادہ،فردوس جمال،جاناں ملک،حیدر سلطان اور اقراء اسلم شامل ہیں۔اس میگا پراجیکٹ کی ڈائریکشن کے فراٗض نامور ڈائریکٹر سہیل افتخار خان انجام دے رہے ہیں جن کے کریڈٹ پر لازوال ڈرامے ہیں ۔سہیل افتخار خان وہ ڈائریکٹر ہیں جن کو اپنے کام پر مکمل دسترس حاصل ہے انہوں نے ہمیشہ اپنے کام کے ساتھ بھرپور انصاف کیا ہے۔’’پاکستان‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے یامین ملک نے بتایا کہ میری ڈرامہ سیریل تیزی سے تکمیل کے مراحل طے کررہی ہے اور میں اسے جلد از جلد مکمل کرکے آن ائیر کرنے کا ارادہ رکھتا ہوں ۔میری ذاتی رائے میں کامیابی کے لئے ٹیم ورک کا ہونا بے حد ضروری ہے اس کے بغیر کامیابی کا حصول ممکن نہیں ہے۔میں اس سے قبل سہیل افتخار خان کے ساتھ کام کرچکا ہوں وہ اپنے کام کو سمجھنے والے تکنیک کار ہیں وہ اور میں معیار کے معاملے میں کبھی سمجھوتہ نہیں کرتے۔اس ڈرامہ سیریل میں کام کرنے والے تمام اداکاروں نے اپنے اپنے کردار سے مکمل انصاف کیا ہے دوران ریکارڈنگ تمام فنکاروں نے ہمارے ساتھ بھرپور تعاون کیا ہے جس کے لئے میں اور میرا ڈائریکٹر ان کا دل سے شکریہ ادا کرتے ہیں۔ڈرامہ سیریل’’کوئی عشق نہ جانے ‘‘میں ریشم،عثمان پیرزادہ،فردوس جمال اور شامل خان اپنے اپنے کیرئیر کے یادگار کرداروں میں نظر آئیں ۔بلاشبہ یہ تمام کے تمام ورسٹائل ہیں یہ چاروں کسی بھی کردار میں اپنے آپ کو بخوبی ڈھالنے کا فن جانتے ہیں۔سہیل افتخار خان نے کہا کہ میں مستقبل میں بھی اس ٹیم کے ساتھ کام کرنا چاہتا ہوں ۔مجھے یقین ہے کہ میری یہ ڈرامہ سیریل بھی کامیابی سے ہمکنار ہوگی،میں ہمیشہ محنت کرتا ہوں اورب نتیجہ ناضرین پر چھوڑ دیتا ہوں کیونکہ میں ان کو سب سے بہتر منصف مانتا ہوں۔ریشم،شامل خان،فردوس جمال،جاناں ملک،اقراء اسلم،حیدر سلطان اور عثمان پیرزادہ نے بھی ملے جلے خیالات کا اظہار کیا ۔

مزید : ایڈیشن 1