بلدیاتی الیکشن آتے ہی حکومت کو دیہاتوں میں سڑکیں یاد آگئیں،بشارت جسپال

بلدیاتی الیکشن آتے ہی حکومت کو دیہاتوں میں سڑکیں یاد آگئیں،بشارت جسپال

 لاہور( نمائندہ خصوصی)پاکستان عوامی تحریک پنجاب کی صوبائی ایگزیکٹو کونسل کے اجلاس میں رہنماؤں نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن آتے ہی وزیراعلیٰ پنجاب کو دیہات اور پکی سڑکیں یاد آ گئیں۔ وزیراعلیٰ پنجاب کا دیہات میں نئی سڑکیں تعمیر کرنے کا اعلان نیا دھوکا ہے ، نئی سڑکیں بنانے کا اعلان کرنے والے ہی دیہات کو تباہ کرنے کے ذمہ دار ہیں۔ ایگزیکٹو کونسل کا اجلاس صوبائی صدر بشارت جسپال کی زیر صدارت منعقد ہوا اجلاس میں فیاض وڑائچ،شیخ زاہد فیاض، راجہ زاہد، جواد حامد، ساجد بھٹی ،احمد نواز انجم، راضیہ نوید، شعیب طاہر و دیگر نے شرکت کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے بشارت جسپال نے کہا کہ 2008 کے بعد دیہات میں تعمیر ہونے والی سڑکوں کی مرمت کیلئے فنڈز استعمال نہیں کیے گئے حالانکہ ہر سال ان سڑکوں کی مرمت کیلئے خزانے سے 38 ہزار روپے فی کلو میٹر کے حساب سے فنڈز جاری ہوتے رہے جو ڈیڑھ ارب روپے سالانہ بنتے ہیں۔یہ مرمتی فنڈز ضلعی حکومتوں کے ذریعے استعمال ہونا تھے جنہیں ن لیگ نے 2008 میں برسراقتدار آنے کے فوراً بعد معطل کر دیا جس کے باعث سڑکوں کی مرمت نہ ہونے کی وجہ سے 5سال کے اندر اندر دیہات میں موجود 37 ہزار کلو میٹر کا انفراسٹرکچر تباہ و برباد ہو گیا ۔ اس بربادی کے ذمہ دار براہ راست وزیراعلیٰ پنجاب ہیں جن کی ساری توجہ لاہور کے میٹرو بس منصوبے پر مرکوز رہی اور70فیصد پنجاب میں دھول اڑتی رہی۔انہوں نے کہا کہ آج 150ارب روپے سے دیہات میں ہزاروں کلو میٹر نئی سڑکیں بنانے کا ڈرامہ کیا جارہا ہے اگر 5سال میں ساڑھے 7ارب روپے کے مختص شدہ فنڈز ان دیہاتی سڑکوں کی مرمت پر خرچ ہو جاتے تو آج قومی خزانہ 150ارب روپے کے نقصان سے بچ سکتا تھا۔۔

مزید : میٹروپولیٹن 1