پروفیشنل ٹیکس کا حدف حاصل کرنے میں ناکام ایکسائز افسروں کیخلاف کاروائی کا فیصلہ

پروفیشنل ٹیکس کا حدف حاصل کرنے میں ناکام ایکسائز افسروں کیخلاف کاروائی کا ...

لاہور(شہباز اکمل جندرن//انوسٹی گیشن سیل) ایکسائز اینڈٹیکسیشن ڈیپارٹمنٹ کی ناقص کارکردگی سے پروفیشنل ٹیکس کا حدف ناممکن ہوگیا۔ ڈائریکٹر جنرل نے حدف کے حصول کے لیے ٹھوس اقدامات کرنے اور ناقص کارکردگی کے حامل ملازمین کے خلاف کارروائی کا حکم دیدیا۔معلوم ہواہے کہ پنجاب حکومت نے مالی سال 2014-15کے لیے ایکسائز اینڈٹیکسیشن ڈیپارٹمنٹ کو پروفیشنل ٹیکس کی مد میں ریکوری کے لیے 82کروڑ 20لاکھ روپے کا ٹارگٹ دے رکھا ہے۔ لیکن مالی سال کے 9ماہ گزرنے کے باوجود ریکوری 50فیصد سے زیادہ نہیں ہوسکی۔ جس پر محکمے کی انتظامیہ تشویش کا شکار ہے۔ اور ڈائریکٹرجنرل ایکسائز اینڈٹیکسیشن پنجاب احمد عزیز تارڑ نے اس سلسلے میں انہتائی سخت موقف اختیار کرتے ہوئے ناقص کارکردگی کے حامل فیلڈ سٹاف کے خلاف کارروائی کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں۔اورتمام ڈائریکٹروں کو ہدایات دی ہیں کہ پروفیشنل ٹیکس کے حدف کو ہرممکن طریقے سے حاصل کیا جائے۔ذرائع کے مطابق ایکسائز اینڈٹیکسیشن ڈیپارٹمنٹ ،وکلاء لیبارٹریوں ، فٹنس کلبوں ، جم، لانڈری، ڈرائی کلینرز ، کیبل آپریٹرز ، پروڈکشن ھاؤسز ، ایڈورٹائز منٹ ، کال سنٹروں ، بروکری، تعمیر ومرمت ، آٹو ورکشاپس ، انڈسٹریل یونٹوں، ٹاؤن پلانروں ، رینٹ اے کار، فیشن ڈیزائیننگ، پراپرٹی ڈیلروں، سکیورٹی ایجنسیوں ، مین پاور سپلائروں ، آئی ٹی سافٹ وئیر ایکسپرٹس ، کنسلٹنٹس ،فریٹ اور کلیرنگ ایجنٹوں ، بڑے اور چین بیوٹی پارلروں ، کلینکس ، ٹھیکیداروں ، ہورڈنگز ، پول سائن ، انشورنس ، ٹیلی کام سیکٹر ، اشتہارات ، شادی ھالز اور ہوٹلوں و ریسٹورنٹوں اورٹھیکیداروں سے مختلف تناسب کے ساتھ پروفیشنل ٹیکس وصول کرتا ہے۔باوثوق زرائع سے معلوم ہوا ہے کہ یکم جولائی 2015سے پروفیشنل ٹیکس کو ختم کیا جارہا ہے جبکہ پنجاب ریونیو اتھارٹی کے ٹیکس نیٹ کو بڑھا یا جائیگا۔ پروفیشنل ٹیکس

مزید : صفحہ آخر