ایران کامعاملہ ، امریکہ نے خطرے کی صورت میں خلیجی ممالک کی مدد کااعلان کردیا

ایران کامعاملہ ، امریکہ نے خطرے کی صورت میں خلیجی ممالک کی مدد کااعلان کردیا
ایران کامعاملہ ، امریکہ نے خطرے کی صورت میں خلیجی ممالک کی مدد کااعلان کردیا

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی صدر باراک اوباما کے خصوصی مشیر بن روڈز نے کہا ہے کہ ان کا ملک خلیجی ریاستوں کو ایران کی جانب سے درپیش کسی بھی خطرے سے نمٹنے میں ان کی مدد کرے گا، صدرباراک اوباما اور امریکی انتظامیہ کی پالیسی یہی ہے کہ خلیج کو ایران کی جانب سے درپیش ہر طرح کے خطرے سے بچایا جائے گااورسعودی عرب کا اُسی طرح دفاع کریں گے جس طرح ماضی میں کرچکے ہیں ، اس حوالے سے جلد ہی کیمپ ڈیوڈ میں ایک سربراہ کانفرنس منعقد ہوگی۔

 روڈز کا کہنا تھا کہ امریکہ ایران کی جانب سے دہشت گردوں سے روابط یا دہشت گردانہ کارروائیوں میں ملوث ہونے پر خاموش نہیں رہے گا۔ اگر تہران کی طرف سے خلیجی ملکوں کو خطرہ ہوا تو امریکا اس خطرے کی روک تھام کے لیے موثر اقدامات کرے گا۔انہوں نے کہا کہ امریکا تمام خلیجی ممالک کے ساتھ موثر تزویراتی تعاون کے لیے کوشاں ہے تاکہ یمن اور شام میں ایران کی مبینہ مداخلت کی روک تھام کی جاسکے تاہم اس حوالے سے باضابطہ بات چیت ڈیوڈ کیمپ چوٹی کانفرنس میں کی جائے گی۔بن روڈز کا کہنا تھا کہ ایران پرعاید اقتصادی پابندیوں میں نرمی اس وقت کی جائے گی جب تہران جوہری پروگرام کے حوالے سے اپنے وعدے ایفا کرے گا۔انہوں نے کہا کہ امریکہ تمام خلیجی ممالک کوبھی ایران کے جوہری پروگرام پر طے پائے سمجھوتے پر اطمینان دلاتا ہے۔ عالمی طاقتوں نے ایران کے ساتھ معاہدہ کر کے اسے جوہری ہتھیاروں کے حصول سے روک دیا ہے۔ تاہم اس کے باوجود ہم ایران پر کڑی نظر رکھیں گے۔

 بن روڈز نے کہا کہ دو سال قبل صدر باراک اوباما نے جنرل اسمبلی کے اجلاس سے خطاب میں کہا تھا کہ امریکا اپنے اتحادیوں کی سلامتی کے لیے ہرقدم اٹھائے گا، ہماری آج بھی یہی پالیسی ہے۔ سعودی عرب کو ایران سمیت کسی بھی بیرونی خطرے کی صورت میں ریاض کا اسی طرح دفاع کریں گے جس طرح کویت پر عراق کے حملے کے وقت کویت کا دفاع کیا گیا تھا۔

مزید : بین الاقوامی /Headlines