یمن معاملہ ، پاک فوج بھی چاہتی ہے کہ ثالثی کریں : وزیردفاع خواجہ آصف

یمن معاملہ ، پاک فوج بھی چاہتی ہے کہ ثالثی کریں : وزیردفاع خواجہ آصف
یمن معاملہ ، پاک فوج بھی چاہتی ہے کہ ثالثی کریں : وزیردفاع خواجہ آصف

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیردفاع خواجہ محمد آصف نے کہاہے کہ پارلیمنٹ جو بھی فیصلہ کرے ، حکومت اس پر عمل کرے گی ، فوج بھی چاہتی ہے کہ پاکستان ثالث کا کردار اداکرے ۔

جیونیوز سے خصوصی گفتگوکرتے ہوئے خواجہ آصف نے بتایاکہ سعودی عرب اور یمن کے معاملے میں پہلی ترجیح ثالثی ہے ، ترکی کے بعد دیگر مسلم ممالک کے ساتھ مشاورت شروع ہوچکی ہے تاہم سعودی عرب کی سلامتی سب کیلئے اہم ہے ۔

ایک سوال کے جوا ب میں اُن کاکہناتھاکہ عمران اور جماعت سے متعلق ایک لفظ بھی غیر پارلیمانی نہیں ، غیرپارلیمانی ثابت کردیں تو معافی مانگنے کو تیار ہیں۔

یادرہے کہ گزشتہ روز اسمبلی میں وزیردفاع آپے سے باہر ہوگئے تھے اور پی ٹی آئی رہنماﺅں کو ’شرم کرو،حیاکرو‘ کا درس دیتے رہے جس پر اپوزیشن کی دیگر جماعتوں نے وزیرموصوف کو تنقید کا نشانہ بنایاجبکہ بیشترسیاسی جماعتیں یمن میں کارروائی کے لیے پاکستان کی مسلح افواج بھیجنے کی مخالفت کررہی ہیں ۔ گذشتہ روز آرمی چیف نے بھی واضح کردیاتھاکہ فوج بھیجنے یانہ بھیجنے کا فیصلہ پارلیمنٹ کوکرناہے ۔

مزید : قومی