سیاسی و عسکری قیادت کا غیر ملکی ایجنسیوں کا معاملہ عالمی سطح پر اٹھانے کا فیصلہ

سیاسی و عسکری قیادت کا غیر ملکی ایجنسیوں کا معاملہ عالمی سطح پر اٹھانے کا ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم نواز شریف کے زیرصدارت نیشنل سکیورٹی کمیٹی کا اجلاس ہوا ہے جس میں غیر ملکی خفیہ اداروں کی پاکستان میں سرگرمیوں کا معاملہ عالمی سطح پر اٹھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں تینوں افواج کے سربراہان، چیئرمین جوائنٹ چیف آف سٹاف کمیٹی، ڈی جی آئی ایس آئی، وزیر خزانہ، وزیر دفاع ، وزیر اطلاعات اور وزیر داخلہ نے شرکت کی۔ اجلاس میں غیر ملکی خفیہ ایجنسیوں کی پاکستان میں دہشت گردانہ سرگرمیوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے یہ معاملہ عالمی سطح پر اٹھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔اجلاس میں امریکہ میں ہونے والی جوہری کانفرنس کا جائزہ لیا گیا اور عالمی برادری کی طرف سے پاکستان کے دہشت گردوں کیخلاف اقدامات پر اطمینان کا اظہار کرنے کو سراہا گیا اورسکیورٹی اداروں کے دہشت گردوں کیخلاف اٹھائے جانے والے اقدامات پر اطمینان کا اظہار کیا گیا اور انسداد دہشت گردی کی جاری کارروائیوں کا تفصیلی جائزہ بھی لیا گیا۔اجلاس میں ملکی سلامتی اور سرحدی سکیورٹی کی صورتحال پر غور کرنے کے ساتھ ساتھ بھارت اور افغانستان سے ملنے والی سرحدوں کی سکیورٹی سخت کرنے اور امریکہ سے ایف 16 طیاروں کی خریداری کا بھی جائزہ لیا گیا۔

اسلام آباد(اے این این)وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری کثیرالجہتی ترقیاتی منصوبوں کا مجموعہ ہے۔ اسلام آباد میں چین کی کمیونسٹ پارٹی کے سیاسی بیورو کے رکن زانگ چنزیان سے باتیں کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان قریبی تعاون ہے اور وہ علاقائی اور عالمی سطحوں پر اہم معاملات پر ایک جیسے خیالات رکھتے ہیں وزیراعظم نے کہا کہ ہماری دوستی اصولوں اور باہمی مفادات پر مبنی ہے جومختلف شعبوں میں قریبی تعاون کی بنیاد پر قائم ہے۔پاکستان میں سلامتی ، تجارت اور بنیادی ڈھانچے کی ترقی میں چین کے بڑے پیمانے پرتعاون پرروشنی ڈالتے ہوئے وزیراعظم نے کہاکہ چین پاکستان اقتصادی راہداری کسی بھی دوسرے ملک کے ساتھ سب سے بڑا جامع منصوبہ ہے۔انہوں نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت توانائی کے منصوبوں سے پاکستان میں لوڈشیڈنگ کا خاتمہ ہو گا۔ نواز شریف نے کہا کہ اس منصوبے سے ملک میں صنعتی ترقی کو فروغ ملے گا اور اقتصادی ترقی یقینی ہو گی جس سے بیروزگاری اور غربت کم ہو گی۔وزیراعظم نے کہا کہ ہم گوادر کی بندرگاہ کو پاکستان کی ترقی کی گزرگاہ بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کاشغر کا گوادر کے ساتھ رابطہ چین پاکستان اقتصادی راہداری کا اہم مقصد ہے جس کے نتیجے میں ملک میں بڑے پیمانے پر صنعتوں کو فروغ ملے گا۔زانگ چنزیان نے دہشت گردی اور انتہا پسندانہ سوچ کے خاتمے کیلئے وزیراعظم کے عزم کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ چینی قیادت معیشت کی ترقی اور امن واستحکام برقرار رکھنے کے لئے حکومت پاکستان کی کارکردگی سے متاثر ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...