ڈیرہ میں بھٹنی قبائل قوم کا جرگہ ،مسائل حل نہ کرنے پا احتجاجی تحریک چلانے کی دھمکی

ڈیرہ میں بھٹنی قبائل قوم کا جرگہ ،مسائل حل نہ کرنے پا احتجاجی تحریک چلانے کی ...

ڈیرہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ) بھٹنی قوم کے قبائلی جرگہ نے علاقہ میں مسائل کے حل نہ ہونے پر احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ مسائل کے حل نہ کرنے میں ملوث صوبائی افسران کے خلاف فوری کارروائی کی جائے ورنہ قبائلی عمائدین احتجاجی تحریک چلانے پر مجبور ہوجائیں گے، بھٹنی قوم کے سرکردہ قبائلی عمائدین مولا نا ملک ہفتہ خان بھٹنی، ملک حاجی پشم خان، ملک حاجی وزیر بادشاہ، ملک پرویز خان، ملک آلم خان، ملک حاجی احمد شاہ، ملک فرمان خان، ملک بختیار احمد، ملک حاجی رئیس خان، ملک حاجی گل محمد ، ملک شاہی خان، ملک سعداللہ خان، ملک حاجی گل، ملک حاجی انجیر گل، ملک صاجزلی اور دیگر عمائدین نے قبائلی جرگہ میں کہا کہ خیبر پختونخواہ کے قبائل اور ایف آرز کے عوام اپنے اپنے علاقوں میں شدید مسائل سے دوچار ہیں اور زیادہ تر آئی ڈی پیز کی زندگی بسر کررہے ہیں، آپریشن راہ نجات اور ضرب عضب کے نتیجہ میں متعدد قبائلی علاقوں میں حکومتی رٹ دوبارہ بحال ہو گئی ہے اور قبائلی عوام دوبارہ اپنے علاقوں میں آباد ہو رہے ہیں جس پر ہم خدا کے شکرگذار ہونے کے ساتھ ساتھ آرمی چیف جنرل راحیل شریف، مرکزی حکومت اور انتظامیہ کے بھی مشکور ہیں ، انہوں نے کہا کہ قبائل میں نوے فیصد علاقوں پر اب حکومتی رٹ قائم ہیا ور جہاں قبائل دوبارہ آباد ہو رہے ہیں وہیں سرکاری محکمہ جات نے کام بھی شروع کردیا ہے ، مقامی انتظامیہ اور قبائل میں جہاں دیگر مسائل کے حل پر اتفاق رائے ہوا تھا وہیں یہ یقین دہانی بھی کرائی گئی تھی کہ قبائلی علاقہ جات میں تعلیمی سہولیات بھی فراہم کی جائیں گی تاکہ ہمارے بچے اپنے اپنے علاقوں میں اعلیٰ تعلیم کا حصول جاری رکھ سکیں مگر افسوس کہ سیکریٹری تعلیم وقار الحسن اور ڈائریکٹر تعلیم حمید اللہ جان کی پالیسیاں تعلیم دوستی سے متصادم ہیں اور قبائلی علاقہ جات سے تعلیمی سکولوں کے خاتمہ کی جانب گامزن ہیں اور ایسی ایسی پیچیدگیاں پیدا کی جا رہی ہیں قبائل شدید پریشانی سے دوچار ہیں انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقہ جات میں دس سالوں سے کوئی پوسٹیں نہیں دی گئی، بھرتیوں پر پابندی عائد کی گئی ہیم جو ظلم اور ناانصافی کے مترادف ہے، انہوں نے کہا کہ سیکریٹری تعلیم فاٹا اور ڈائریکٹر تعلیم فاٹا کے اقدامات سے قبائل میں حکومت کے خلاف نفرت پیدا کرنے اور انہیں اشتعال دلانے کا باعث بن رہی ہیں جو کسی صورت میں قبول نہیں کی جا سکتیں، انہوں نے کہا کہ ہمارا گورنر خیبرپختونخواہ اقبال ظفر جھگڑا، سے مطالبہ ہے کہ تعلیم اور قبائل دشمن افسران سے ہمیں نجات دلائی جائے اور ہمارے مسائل کو فوری طور پر حل کرنے کے لیئے عملی اقدامات اٹھائے جائیں اور قبائل کے مسائل کا سبب بننے والے افسران کے خلاف کارروائی کی جائے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...