لوڈشیڈنگ کا بدترین عذاب جاری، 2018 تک کا عرصہ عوام پر بھاری

لوڈشیڈنگ کا بدترین عذاب جاری، 2018 تک کا عرصہ عوام پر بھاری

ملتان، وہاڑی، میلسی (وقائع نگار، نمائندگان) ملتان سمیت جنوبی پنجاب میں لوڈشیڈنگ کا بدترین عذاب جاری ہے۔ جبکہ حکومتی اعلان کے مطابق بجلی بحران 2018 تک جاری رہے گا۔ اس فیصلے سے شہری شدید مایوسی کا شکار ہیں۔ جنوبی پنجاب کا خطہ اپنی طلب اور ضرورت سے زائد بجلی پیدا کرنے کے باوجود بحران (بقیہ نمبر32صفحہ7پر )

کا شکار ہے۔ مذکورہ خط میں بجلی کے بدترین بحران پر ارکان قومی و صوبائی اسمبلی بھی خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔ حکومت کی جانب سے دسمبر 2018 میں بجلی کے بحران کے خاتمے کی ’’نوید‘‘ نے لوڈشیڈنگ کے اندھیرے مزید اڑھائی سال تک جاری رکھنے باضابطہ اعلان کر دیا ہے۔ اس بارے میں ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ اس فیصلے پر شہریوں کو اور ملک بھر کے عوام کو شدید مایوسی ہوئی ہے۔ وہاڑی سے بیورو رپورٹ، نا مہ نگار کے مطابق وہاڑی کے معروف چوڑی بازار میں صبح 9بجے سے بجلی بند ، تاجروں کا شدید احتجاج ، تاجر رہنماؤں شیخ عبدالرحمن ، شیخ عمران ، محمد ایوب ، ملک رفاقت ، عمردراز اور دیگر تاجروں نے بتایا کہ صبح نو بجے سے بجلی بند ہے شدید گرمی کی وجہ سے خریداری کے لیے آئی ہوئی خواتین کو شدید پریشانی کاسامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ میلسی سے نمائندہ پاکستان کے مطابق میلسی میں بجلی کی بدترین لوڈ شیڈنگ سے شہری عاجز آگئے کاروبارزند گی معطل ہوکررہ گیابجلی کی عدم فراہمی سے فیکٹریاں بند ہوناشروع ہوگئیں جس سے مزدورطبقہ بے روز گاراوران کے چولہے ٹھنڈے ہوناشروع ہوگئے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...