ہائی کورٹ :ناجائز اثاثہ جات کیس ، پاناما لیکس کی بنیاد پر شریف فیملی سمیت 64سیاستدانوں اور شخصیات کو نوٹس جاری

ہائی کورٹ :ناجائز اثاثہ جات کیس ، پاناما لیکس کی بنیاد پر شریف فیملی سمیت ...
ہائی کورٹ :ناجائز اثاثہ جات کیس ، پاناما لیکس کی بنیاد پر شریف فیملی سمیت 64سیاستدانوں اور شخصیات کو نوٹس جاری

  


لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس خالد محمود خان نے ناجائز اثاثہ جات کیس میں وزیر اعظم نواز شریف،کلثوم نواز،مریم نوازسمیت شریف فیملی کے 6 افراد اوردیگر58 مدعاعلیہان کے خلاف نیب میں کارروائی کے لئے دائرمتفرق درخواست پر نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیاہے جبکہ مزید سماعت18اپریل تک ملتوی کر دی۔

درخواست گزار بئیرسٹر جاوید اقبال جعفری نے عدالت کو بتایا کہ وزیر اعظم ان کی اہلیہ کلثوم نواز، بیٹوں حسن اور حسین نواز کے علاوہ ان کی بیٹی مریم نواز نے اپنے اثاثے چھپائے,غیر قانونی طور پر رقم بیرون ملک منتقل کی اور قوم سے غلط بیانی کی،اس حوالے سے پاناما پیپرز بھی منظر عام پر آگئے ہیں ،انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نے ذاتی حیثیت میں یہ اقدام کیا لہذا عدالت انہیں نااہل قرار دے۔بیرسٹر جاوید اقبال جعفری کی بنیادی درخواست میں وزیراعظم نواز شریف،وزیراعلی شہباز شریف،آصف علی زرداری، عمران خان ،چودھری شجاعت حسین ،چودھری پرویز الہی ،رحمن ملک اورنجم سیٹھی سمیت 64شخصیات پر الزام لگایا گیا ہے کہ انہوں نے منی لانڈرنگ کے ذریعے رقم بیرون ملک منتقل کی ہے،اپنی متفرق درخواست میں انہوں نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ نیب کو پاناما لیکس کے معاملے کی شفاف تحقیقات کرنے کا پابند بنایا جائے جبکہ میاں نواز شریف کے علاوہ بیگم کلثوم نواز، حسین نواز،حسن نواز ،مریم نواز کو انتخابات کے لئے نااہل قرار دیا جائے۔

مزید : لاہور


loading...