کراچی، ممتاز ایجنسی کارانداز کے تحت خواتین کی مالیاتی خدمات تک رسائی بڑھانے کے لیے ورکشاپ

کراچی، ممتاز ایجنسی کارانداز کے تحت خواتین کی مالیاتی خدمات تک رسائی بڑھانے ...

کراچی (آن لائن )پاکستان میں مالیاتی خدمات کا دائرہ وسیع کرنے اور سرمائے تک رسائی ممکن بنانے کے لیے خدمات فراہم کرنے والی ممتاز ایجنسی کارانداز پاکستان کے تحت ملک میں خواتین کی مالیاتی خدمات تک رسائی بڑھانے کے لیے ایک ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔ کارانداز پاکستان برطانیہ کے ڈیپارٹمنٹ فار انٹرنیشنل ڈیویلپمنٹ (ڈی ایف آئی ڈی) اور بل اینڈ میلنڈاگیٹس فاؤنڈیشن (بی ایم جی ایف) کی معاونت سے ادارہ جاتی اور مالیاتی سپورٹ فراہم کررہی ہے۔ خواتین کی مالیاتی خدمات تک رسائی بڑھانے کے لیے منعقد ورکشاپ کا انعقاد بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن کے اشتراک سے کیا گیا جس میں انٹرنیشنل فنانس کارپوریشن (آئی ایف سی)، خوشحالی بینک، FINCA بینک، پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی (پی ٹی اے)، FinSurgents سمیت مالیاتی خدمات کو فروغ دینے کے لیے مصروف عمل دیگر اداروں نے شرکت کی۔

ورکشاپ سے مالیاتی خدمات کے فروغ کے لیے متحرک مالیاتی اداروں بشمول ویمنز ورلڈ بینکنگ (ڈبلیو ڈبلیو بی) اور ideas42کے ماہرین نے بطورمہمان مقرر خواتین کی مالی شمولیت کے بارے میں اپنے گلوبل تجربے اور معلومات سے آگہی فراہم کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کارانداز کے سی ای او علی سرفراز نے کہا کہ ’’پاکستان کی کل آبادی میں خواتین کا تناسب 51فیصد ہے تاہم ورلڈ بینک کے اعدادوشمار کے مطابق صرف 5فیصد خواتین کو بینک اکاؤنٹ کی سہولت دستیاب ہے۔ ملک میں خواتین کی مالی شمولیت میں اضافہ کارانداز پاکستان کی بنیادی ترجیحات اور اوّلین مقاصد میں شامل ہے۔ اقوام متحدہ کے پائیدار ترقی کے اہداف کو موثر انداز میں پورا کرنے کے لیے پاکستان میں قومی ترقی کے عمل میں خواتین کے کردار کو فروغ دینے کی اشد ضرورت ہے اور اس کا ایک طریقہ خواتین کو مالیاتی خدمات کی فراہمی کو ممکن بنانا ہے۔ ‘‘ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے ڈبلیو ڈبلیو بی کی چیف پراڈکٹ ڈیویلپمنٹ آفیسر Anna Ginchermanنے شرکاء کو خواتین کی مالی شمولیت بڑھانے کے لیے دنیا کی متعدد کامیاب اور موثر مالی مصنوعات سے آگاہ کیا۔ اس موقع پر ideas42کے سینئر ایسوسی ایٹ Alex Blauنے خواتین کے لیے جدید اور اختراعی ساخت پر مشتمل ڈیجیٹل مالیاتی مصنوعات کے بارے میں معلومات فراہم کیں۔ اختتامی کلمات ادا کرتے ہوئے پاکستان میں DFID کی گروپ ہیڈ اکنامک گروتھ ،Dr. Louise Walker نے کہا کہ ’’کسی بھی معاشرے کی سماجی ترقی میں خواتین کا کردار اہم ہے اور انہیں یکساں مواقع فراہم کرنا وقت کی ضرورت ہے۔ ملکی ترقی کے لیے خواتین کی مالی شمولیت بے حد اہمیت کی حامل ہے۔ اس ضمن میں DFID اپنے پارٹنرز کے ساتھ مل کر پاکستان کی ترقی کی راہ میں حائل اس رکاوٹ کو دور

کرنے کے لیے کوشاں ہے۔ میں اس ورکشاپ کے انعقاد کے ذریعے خواتین کے لیے مالیاتی مصنوعات اور خدمات کی ضرورت کو اجاگر کرنے پر کارانداز پاکستان کو خراج تحسین پیش کرتی ہوں۔ مجھے امید ہے کہ یہ اقدام پاکستان کے مالیاتی منظر نامے میں ایک نمایاں مثبت تبدیلی لانے کا پیش خیمہ ثابت ہوگا۔ ‘‘#

مزید : کامرس


loading...