سرکاری تعلیمی اداروں کودانش اتھارٹی کے حوالے کرنا غیر دانشمندانہ اقدام ہے،محمد سرفراز

سرکاری تعلیمی اداروں کودانش اتھارٹی کے حوالے کرنا غیر دانشمندانہ اقدام ...

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)سرکاری تعلیمی اداروں کودانش اتھارٹی کے حوالے کرنا غیر دانشمندانہ اقدام ہے۔ چیئرمین پنجاب ٹیچرز یونین۔ پیف اور دانش اتھارٹی کی مداخلت بند نہ ہوئی تو احتجاجی جلسہ و دھرنا دیں گے۔ مرکز ی صدر پنجاب ٹیچرز یونین پنجاب ٹیچرز یونین پنجاب کے مرکزی صدر چوہدری محمد سرفراز ،چےئر مین سید سجاد اکبر کاظمی ،جنرل سیکرٹری رانا لیاقت ، جام صادق، رانا انوار،راناالطاف حسین، ساجد محمود چشتی، عبدالقیوم راہی ، سعید نامدار، اسلم گھمن، افضل کیانی، رحمت اللہ قریشی، شیخ اختر، عبد الطارق نیازی،رانا طارق، راؤ عابد، راؤ شمشاد، نجم النساء، صفدر کالرو، ،یونس حسن، منیر انجم ، امتیاز طاہر و دیگرنے کہا ہے کہ سرکاری تعلیمی اداروں کو سنٹر آف ایکسیلنس کے نام پر دانش سکول اتھارٹی کے حوالہ کرنا غیر دانشمندانہ فیصلہ ہے ۔حکومتی اقدام کی وجہ سے ضلع لاہور کے ان 13تعلیمی ادارے کے سینکڑوں اساتذہ خوف و ہراس میں مبتلاہوکر غیر یقینی صورتحال سے دوچار ہیں جسکی وجہ سے ان اداروں میں درس و تدریس کی فضاء خراب ہے ۔دور دراز تبادلوں کی پریشانی نے اساتذہ خصوصاً خواتین اساتذہ میں عدم تحفظ کی فضاء پید کر رکھی ہے ۔

ہرروز افواہیں جنم لے رہی ہیں لہذا وزیراعلیٰ پنجاب ، صوبائی وزیر تعلیم پنجاب ، سیکرٹری سکولز پنجاب سے مطالبہ ہے کہ ان لاہور کے 13تعلیمی اداروں سمیت پنجاب بھر کے 26سرکاری تعلیمی اداروں کو دانش سکولز اتھارٹی کی گرفت سے آزاد کرکیا جائے کیونکہ یہ ادارے تعلیمی کارکردگی کے لحاظ سے بہترین ہیں اور یہاں کام کرنے والے اساتذہ انتہائی کوالیفائڈ اور تجربہ کار ہیں۔15اپریل تک پیف و دانش سکولز اتھارٹی کی مداخلت بند نہ ہوئی اور اپ گریڈیشن کا نوٹیفیکیشن جاری نہ ہوا تو لاہور سمیت پنجاب بھر سے اساتذہ 18اپریل کو پنجاب اسمبلی کے سامنے احتجاجی جلسہ و دھرنا دیں گے

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...