مصرمیں گیارہ سالہ لڑکے پربچی کی عصمت ریزی کی کوشش کا الزام

مصرمیں گیارہ سالہ لڑکے پربچی کی عصمت ریزی کی کوشش کا الزام

قاہرہ (این این آئی)مصرمیں ایک گیارہ سالہ لڑکے کی جانب سے اپنے ہی اسکول کی ایک کم عمر بچی کی عصمت ریزی کی کوشش کی خبر جنگل کی آگ کی طرح پھیلی جس کے بعد پبلک پر اسیکیوٹر جنرل نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے مفرور لڑکے کی فوری گرفتاری اور اسے عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق یہ واقعہ مصر کی شمالی گورنری الدقھلیہ کے ایک اسکول میں حال ہی میں پیش آیا۔پراسیکیوٹر جنرل نے پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ چھٹی جماعت کے طالب علم گیارہ سالہ ملزم کو دوسری کلاس کی ایک بچی کو ٹوائلٹ میں لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنانے کی کوشش کرنے پر فوری گرفتار کریں۔ ملزم کم عمر لڑکے کی فورینزک رپورٹ تیار کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے۔تفتیش کے دوران اسکول کے اساتذہ نے بتایا کہ انہوں نے اسکول کے ایک ٹوائلٹ میں چیخ پکار کی آوازیں سنیں۔ اس پرٹوائلٹ کو کھولا گیا تو ملزم ایک چھوٹی بچی کے ساتھ وہاں موجود تھا۔ اس پر لڑکے کو اسکول کے دفتر میں لایا گیا جہاں اس کے والد کو طلب کرکے تمام تفصیلات بتائی گئیں۔ اس کے ساتھ پولیس کو بھی اطلاع کی گئی مگر لڑکے کا والد اسے لے کر وہاں سے فرار ہوگیا۔خیال رہے کہ حال ہی میں مصر میں ایسا ہی ایک شرمناک واقعہ پیش آیا تھا جب پولیس نے ایک 36 سالہ درندہ نما شخص کو حراست میں لیا جس پر ایک اٹھارہ ماہ کی بچی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کا الزام عاید کیا گیا تھا۔

مزید : عالمی منظر


loading...