امریکا،ایران کومیزائل ٹیکنالوجی فراہم کرنے میں ملوث ملزم گرفتار

امریکا،ایران کومیزائل ٹیکنالوجی فراہم کرنے میں ملوث ملزم گرفتار

واشنگٹن(این این آئی)امریکا کی وفاقی پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے دارالحکومت واشنگٹن سے ایک مشتبہ ایرانی سہولت کار کوحراست میں لیا ہے جس پر منی لانڈرنگ اور ممنوعہ میزائل ٹیکنالوجی ایران کو فراہم کرنے کا الزام عاید کیا گیا ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق امریکی پولیس نے گرفتار مشتبہ ایرانی کی شناخت قباد قاسم بور کے نام سے کی ہے۔ اس کے پاس ایران اور کینیڈا دونوں کی شہریت بتائی جاتی ہے۔قباد قاسم بور نے اپنے دوستوں اور والد کے ساتھ مل کر امریکا میں کئی جعلی کمپنیاں بنا رکھی ہیں۔ ان جعلی کمپنیوں کے توسط سے وہ منی لانڈرنگ اور ایرانی رجیم کو حساس میزائل ٹیکنالوجی فراہم کرتا رہا ہے۔امریکی پولیس کا کہنا تھاکہ اس نے ایک ایرانی شہری کو کئی سال کی چھان بین کے بعد حراست میں لیا ہے۔ گرفتار شخص ایران کو رقوم فراہم کرنے اور ممنوعی میزائل ٹیکنالوجی تہران تک پہنچانے کا مرکزی منصوبہ ساز ہے۔رپورٹ کے مطابق قاسم بور اپنے دو دیگر ساتھیوں کی مدد سے ممنوعہ ٹیکنالوجی چین کے راستے ایران پہنچاتا رہا ہے۔ اس نے ایران کو مختلف ذرائع سے ملٹری نیویگیشن آلات اور دیگر ممنوعہ سامان فراہم کیا۔ اس نے منی لانڈرنگ کے کاروبار اور ممنوعہ اشیا کی ایران منتقلی کے لیے کئی جعلی کمپنیاں بھی قائم کر رکھی تھیں۔ ان جعلی کمپنیوں کی فرضی سربراہی چینی باشندوں کو سونپی گئی تھی۔خیال رہے کہ تین فروری کو امریکی وزارت خزانہ نے 13 ایرانی شخصیات اور 12 کمپنیوں کو ایران سے لین دین کے الزام میں بلیک لسٹ کردیا تھا۔ ان پر بھی ایران کو میزائل ٹیکنالوجی فراہم کرنے اور ایرانی پاسداران انقلاب کی معاونت کرنے کا الزام عاید کیا گیا تھا۔

مزید : عالمی منظر


loading...