جرمن کابینہ نے آن لائن نفرت انگیزی پر بھاری جرمانہ عائد کرنے کی منظوری دیدی

جرمن کابینہ نے آن لائن نفرت انگیزی پر بھاری جرمانہ عائد کرنے کی منظوری دیدی

برلن(این این آئی)جرمن کابینہ نے اس مسودہ قانون کی منظوری دے دی ہے، جس کے تحت انٹرنیٹ کمپنیوں کو پابند بنایا گیا ہے کہ وہ نفرت انگیزی پر مبنی مواد کو ڈیلیٹ کریں، بہ صورت دیگر ان پر جرمانہ عائد کیا جائے گا۔میڈیارپورٹس کے مطابق جرمن وزیر انصاف ہائیکو ماس نے آن لائن نفرت انگیزی کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے قانون سازی کی تجویز دی تھی، جس کے تحت اسے ایک قابل تعزیر جرم قرار دیا گیا ہے۔ اس قانون کے تحت ایسی انٹرنیٹ کمپنیاں جو مجرمانہ مواد ہٹانے میں ناکام رہیں گی، ان پر جرمانہ عائد کیا جا سکے گا۔چانسلر انگیلا کی کابینہ نے اس قانونی مسودے کی منظوری دے دی ہے، جس میں سوشل میڈیا ویب سائٹس فیس بک اور ٹوئٹر کو نفرت انگیز مواد ڈیلیٹ کرنے کا پابند بنایا گیا ہے، بہ صورت دیگر ان ان پر جرمانہ عائد کیا جا سکے گا۔ اس قانون پر چوں کہ وسیع تر حکومتی اتحاد میں شامل جرمنی کی بڑی جماعتیں متفق ہیں، اس لیے قانون کی پارلیمانی منظوری کی راہ میں کوئی رکاوٹ دکھائی نہیں دیتی۔ہائیکو ماس نے اس قانونی مسودے کو کابینہ سے منظوری کے لیے پیش کرنے سے قبل خبردار کیا تھا کہ ایسی انٹرنیٹ کمپنیاں جو نفرت انگیز اور مجرمانہ مواد ڈیلیٹ کرنے میں ناکام رہیں گی، انہیں پچاس ملین یورو تک کے جرمانے کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

مزید : عالمی منظر


loading...