بیدیاں روڈ خودکش دھماکہ میں استعمال ہونیوالی موٹر سائیکل کا مالک گرفتار

بیدیاں روڈ خودکش دھماکہ میں استعمال ہونیوالی موٹر سائیکل کا مالک گرفتار

لاہور( خبرنگار) بیدیاں روڈ خود کش دھماکہ میں استعمال ہونیوالی موٹر سائیکل کے مالک کو حراست میں لے لیا جبکہ تحقیقاتی ٹیموں نے تحقیقات کا دائرہ کار وسیع کر تے ہوئے مانانوالہ چوک اور محفوظ پورہ روڈ پر واقع پٹرول پمپ سمیت بیدیاں روڈ اور اردگرد کے علاقوں میں نصب کیمروں کی فوٹیج قبضہ میں لے لیں جس سے تحقیقات میں اہم پیش رفت ہونے کے بارے بتایا گیا ہے۔دوسری جانب مانانوالہ اور بیدیاں روڈ سمیت اردگرد علاقوں میں دوسرے روز بھی فضا سوگوار رہی جبکہ دکانداروں نے سانحہ کیخلاف اپنا کاروبار بند رکھا اور شہداء کی خواتین جائے وقوعہ پر بین کر تی نظر آئیں ۔تفصیلات کے مطابق ذرائع نے بتایا ہے کہ تحقیقاتی ٹیموں نے گزشتہ روز مانانوالہ اور ارد گرد کی سڑکوں اور شاہراؤں پر نصب کیمروں کی مدد سے خود کش دھماکہ میں استعمال ہونیوالی موٹر سائیکل کا سراغ لگایا لیا ہے ، موٹر سائیکل 2015ء ماڈل کی اور نمبر ایل ای وی 6982 ہے جو وحید عباس کے نام سے رجسٹرڈ ہے اوروہ بڑے درس میاں مغل پورہ کا رہائشی ہے جسے حراست میں لے لیا گیا ہے ۔تاہم ایس ایچ او مغل پورہ کا کہنا ہے ایک خفیہ ادارہ کے اہلکاروں سمیت انویسٹی گیشن کی ایک ٹیم نے ان سے مدد حاصل کی تھی، تاہم یہ معلوم نہیں کہ موٹر سائیکل مالک پکڑا گیاہے یا نہیں۔ادھر سانحہ بیدیاں روڈ پر دوسرے روز جائے وقوعہ پرفوجی جوان اویس ظفر اور محنت کش محمد بوٹا کی رشتے دار خواتین اور عزیز و اقارب زار و قطار روتے رہے، فضا سوگوار رہی ، دکانداروں نے سانحہ کیخلاف اپنا کاروبار بند رکھا، اس موقع پر اردگرد علاقوں کے مکین جن میں خواتین کی تعداد زیادہ دیکھنے میں آئی دن بھر جائے وقوعہ پر کھڑے ہو کر واقعہ کی شدید مذمت اور دہشت گردوں کو کوستے رہے، اس موقع پر پولیس نے جائے وقوعہ کے اردگرد قناتیں لگا کر اسکو کور کر رکھا تھا دوسری جانب حساس اداروں کاؤنٹر ٹیرر ازم اور سی ٹی ڈی کی ٹیموں سمیت مختلف تحقیقاتی اداروں نے بھی جائے وقوعہ کا معائنہ کیا۔دوسری جانب کاؤنٹر ٹیرزم سی ٹی ڈی اور پولیس حکام سمیت مختلف تحقیقاتی اداروں کی ٹیموں نے مانانوالہ چوک میں محفوظ پورہ پٹرول پمپ پر نصب کیمروں کی مدد سے تحقیقات کو آگے بڑھانا چاہا تو چار میں سے تین کیمرے خراب نکلے، جس پر ایک تحقیقاتی ٹیم نے باقاعدہ وزیر اعلیٰ پنجاب کو اس بارے میں رپورٹ پیش کی کہ مانا نوالہ چوک میں نصب کیمرے ہی خراب ہیں، تاہم تحقیقاتی ٹیمیں تفتیش کا دائرہ کار وسیع کرتے ہوئے اردگرد کے چوراہوں سمیت بیدیاں روڈ پر نصب کیمروں کی فوٹیج سے تحقیقات کو آگے بڑھارہی ہیں ، جس میں ایک تحقیقاتی ٹیم کا کہنا ہے سی سی ٹی وی کیمروں سے تحقیقات میں کافی مدد ملی ہے اور تفتیش میں اہم پیش رفت ہوئی ہے۔ اس موقع پر ایک تحقیقاتی ٹیم کے ایک اعلیٰ افسر نے ’’پاکستان‘‘ کو بتایا پٹرول پمپ پر لگے کیمروں کی فوٹیج بھی حاصل کر لی گئی ہے جس سے بھی تحقیقات میں کافی حد تک مدد ملی ہے جبکہ ایک افسر کا کہنا تھا پٹرول پمپ کے ملازمین سے بھی پوچھ گچھ کیساتھ پٹرول پمپ کے کیمروں سے ہی تحقیقات شروع کی گئی ہے جس سے کافی حد تک اہم چیزیں سامنے آئی ہیں، انکا مزید کہنا تھا ارد گرد آبادیوں سے سرچ آپریشن کے دوران حراست میں لیے جانیوالے مشکوک افراد کو بھی تحقیقات کا حصہ بنایا گیا ہے جبکہ سانحہ مال روڈ کے سہولت کار سے بھی اس حوالے سے معلومات حاصل کی جا رہی ہیں۔

مالک گرفتار

مزید : صفحہ اول


loading...