اقتصادی راہداری منصوبوں کی بروقت تکمیل سے پوا خطہ خوشحال ہو جائیگا : ممنون حسین

اقتصادی راہداری منصوبوں کی بروقت تکمیل سے پوا خطہ خوشحال ہو جائیگا : ممنون ...

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ پاک چین دوستی خطے میں امن کی ضمانت بن گئی ہے اور پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت ترقیاتی منصوبوں کی بروقت تکمیل سے پاکستان سمیت پورے خطے میں ترقی اور خوشحالی یقینی ہو جائے گی جبکہ چین کی سیاسی مشاورتی کونسل کے چیئرمین یوزنگ ڑنگ نے کہا ہے کہ پاکستان اور چین ترقی کے ثرمات میں پوری دنیا کو شریک کرنا چاہتے ہیں، وہ ممالک بہت جلد تنہا جائیں گے جو اپنے مفادات کے لیے عالمی برادری کو نظر اندار کر د یتے ہیں۔ دونوں رہنماوں نے ان خیالات کا اظہار ایوان صدر میں ہونے والی اپنی ملاقات میں کہا ، اس موقع پر چیئرمین سینٹ میاں رضا ربانی، سینیٹر سلیم مانڈوی والا، مشاورتی کونسل کے دو وائس چیئرمین ، ارکان، چین کے سفیر اور دونوں ملکوں کے اعلی حکام بھی موجود تھے۔صدر مملکت نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری سے نہ صرف دونوں ملکوں کے درمیان اقتصادی تعاون مضبوط ہو گا بلکہ اس سے دیگر قومیں بھی بھی فائدہ اٹھاسکیں گی ۔ انھوں نے کہا کہ آج ایک خطہ ایک شاہراہ کے چینی تصور کی اہمیت پوری دنیا تسلیم کر رہی ہے جو ترقی و استحکام کے لیے بہت مفید ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان اور چین کی دوستی خطے میں امن کی ضمانت بن گئی ہے۔انھوں نے کہا کہ چین کے ساتھ دوستی پاکستان کی خارجہ پالیسی کی بنیا د ہے اورپاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں چین کے ساتھ دوستی کے فروغ کی پر جوش حامی ہیں کیونکہ دونوں ملک باہمی احترام اور اعتماد کے رشتے سے مالا مال ہیں۔ وفد سے گفتگو کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان پارلیمانی وفود کے دوروں سے تعلقات مزید مستحکم ہوں گے اور سرمایہ کاری میں بھی اضافہ ہو گا۔انھوں نے کہا کہ پاکستان اور چین نے ہمیشہ مشکل وقت میں ایک دوسرے کا ساتھ دیا ہے جبکہ پاکستان کی اقتصادی ترقی میں چین کا کردار قابل ستائش ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان سرمامہ کاری کو مزید وسعت دینے کی ضرورت ہے۔ اس موقع پر صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان نے تائیوان، تبت ، سنکیانگ، جنوبی چینی سمندر کے بارے میں ہمیشہ چینی حکومت کے موقف کی تائید کی ہے۔صدر مملکت نے وفد کو بتایا کہ آپریشن ضرب عضب اور اب آپریشن رد الفساد کے ذریعے دہشت گردوں کا پورے ملک سے صفایا کیا جا رہا ہے اور ملکی ترقی میں رکاوٹ بننے والوں کے ساتھ سختی سے نمٹا جا رہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ دہشت گردی پر کافی حد تک قابو پا لیا ہے۔ صدر مملکت نے وفد کو یقین دلایا کہ دہشت گردگروپوں بشمول ایسٹ ترکستان اسلامک موومنٹ (ETIM) کے خلاف بلاتفریق کاروائیاں کی جارہی ہیں جس کے مثبت نتائج سامنے آ رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ہم چین کے شکر گزار ہیں کہ انھوں نے دہشت گردی کے خلاف کارروائیوں میں پاکستان کی حمایت کی ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کو دیکھتے ہوئے دنیا کے بیشتر ممالک شرکت کے خواہش مند ہیں۔ اس کی اہمیت کو دیکھتے ہوئے یہ کہنا درست ہو گا کہ مستقبل ا سی خطے کا ہے اور دنیا کی تمام نظریں اس منصوبے پر لگی ہوئی ہیں اور اس کی افادیت تیزی سے واضح ہو رہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ حکومت پاکستان میں موجود چینی ماہرین کی حفاظت کیلیے انتہائی سخت انتظامات کیے ہیں۔صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان اور چین کی یونیورسٹیوں سمیت مختلف اداروں کے درمیان رابطوں میں مزید اضافہ ہونا چاہیے۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاکستانی ڈرامے چینی ٹیلی ویڑ ن پر د کھائے جائیں تاکہ دونوں ملکی کی دوستی میں مزید اضافہ ہو سکے۔ اس موقع پر چین کی سیاسی مشاورتی کونسل کے چیئرمین یوزنگ ڑنگ نے کہا کہ اپنے مفادات کے لیے دنیا کو نظر انداز کرنے والے ممالک جلد تنہا ہو جائیں گے۔ مسٹر یوزنگ نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان تعاون آئندہ نسلوں کے لیے ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ پاکستان اسٹریٹیجک اہمیت کے مطابق خطے میں اہم کردار ادا کر رہا ہے اور دونوں ملکوں کے درمیان معاشی اور سماجی شعبے میں تعاون بڑھے گا۔انھوں نے کہا کہ چین بجلی کی پیدوار کے لیے مشینری کی تیاری میں بھی پاکستان کی مدد کر سکتا ہے۔ چیئرمین نے کہا کہ پاکستان بہت جلد بجلی کی پیداوار میں خود کفیل ہو جائے گا۔انھوں نے سی پیک منصوبیپر پیش رفت کو خوش آئند قرار دیا۔اس موقع پر صدر مملکت نے چینی صدر اور چینی عوام کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیاجبکہ چین کی سیاسی مشاورتی کونسل کے چیئرمین یوزنگ ڑنگ نے بھی چینی حکومت کی طرف سے صدر مملکت ممنون حسین کو نیک تمناوں کا پیغام بھی پہنچایا۔ دریں اثناء صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ پاکستانی سفارکار اقتصادی سفارتکاری پر توجہ دیں تاکہ عالم گیریت کے فوائد سے فائدہ اٹھایا جاسکے اور عالمی برادری کے ساتھ پاکستان کے تجارتی اور معاشی تعاون میں اضافہ ہو سکے۔صدر مملکت ممنون حسین نے یہ بات ملک کی پہلی خاتون سیکریٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ سے بات چیت کرتے ہوئے کہی جنہوں نے آج ایوان صدر میں ان سے ملاقات کی ۔صدر مملکت نے تہمینہ جنجوعہ کو ان کی نئی ذمہ داریوں پر مبارک باد دیتے ہوئے توقع ظاہر کی کہ وہ اپنی بہترین صلاحیتوں کے ساتھ عالمی سطح پر پاکستان کے مفادات کا تحفظ کریں گی ۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان کی خارجہ پالیسی کا بنیادی مقصد بین الاقوامی تعاون کے ذریعے امن و استحکام کا فروغ ہے ۔صدر مملکت نے کہا کہ عالمی برادری پر پاکستان متحرک ، ترقی پسند اور معتدل جمہوری اسلامی پاکستان کے تصور کو فروغ دینے کی ضرورت ہے ۔ انھوں نے ہدایت کی کہ سفارت کار مسئلہ کشمیر اور کشمیری عوام پر بھارتی مظالم سے دنیا کو آگاہ کیا جائے اور بتایا جائے کہ بھارت کی طرف سے کس طرح کشمیریوں کے بنیادی انسانی حقوق کو پامال کیا جا رہا ہے ۔ انھوں نے سیکریٹری خارجہ کو ہدایت کی کہ وہ غیر ملکی سفارت کار وں اور وفود کو دہشت گردی کے خلاف کارروائیوں کے سلسلے میں پاکستانی عوام اور سیکیورٹی فورسز کی قربانیوں سے آگاہ کریں ۔ انھوں نے کہا کہ سمندر پار پاکستانیوں کو ہر ممکن سہولت پہنچانے کے لیے اقدامات کریں ۔

صدرممنون حسین

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...