خواجہ فرید یونیورسٹی کی سٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس‘ تعمیری منصوبوں پر بحث

خواجہ فرید یونیورسٹی کی سٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس‘ تعمیری منصوبوں پر بحث

رحیم یار خان (بیورورپورٹ)خواجہ فرید یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی کی سٹےئرنگ کمیٹی کا آٹھواں اجلاس چیئرمین سٹیئرنگ کمیٹی /رکن قومی اسمبلی مخدوم خسروبختیار کی زیر صدارت ڈپٹی کمشنر آفس میں منعقد ہوا۔اجلاس میں سٹیئرنگ کمیٹی کے دیگر ممبران ایم این(بقیہ نمبر54صفحہ12پر )

ایمیاں امتیاز احمد ،وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر انجینئر اطہر محبوب ،ڈپٹی کمشنر رحیم یار خان سقراط امان رانا،ایم پی اے میاں اسلام نے ڈپٹی کمشنر آفس رحیم یار خان جبکہ دیگروائس چانسلر یو،ای ،ٹی لا ہور فضل احمد خالد،ایڈیشنل سیکرٹری ایچ،ای،ڈی محمد اجمل بھٹی ،کمشنر بہاولپورکیپٹن (ر)ثاقب ظفر ،چیف آپریٹنگ آفیسر پنجاب ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ خرم جہانزیب نے بذریعہ وڈیو لنک شرکت کی ۔چیئرمین سٹیرنگ کمیٹی مخدوم خسرو بختیار نے کہا کہ خواجہ فرید انجینئرنگ اینڈ آئی ٹی یونیورسٹی کی مقررہ مدت میں معیاری تکمیل پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا اور اس کی بروقت تکمیل سے اس خطہ کا روشن مستقبل وابستہ ہے جس سے دیگر صوبوں کے طالبعلم بھی مستفید ہوں گے کمشنر بہاولپور ڈویژن کیپٹن(ر)ثاقب ظفر نے کہا کہ وہ خواجہ فرید انجینئرنگ اینڈ آئی ٹی یونیورسٹی کے تعمیراتی کاموں کی براہ راست مانیٹرنگ کر رہے ہیں اجلاس کے آغاز میں وائس چانسلر خواجہ فرید یونیورسٹی ڈاکٹر اطہر محبوب نے یونیورسٹی میں ہونے والے تعمیری منصوبوں کے بارے میں حالیہ رپورٹ پیش کی۔انھوں نے بتایا کہ اس وقت یونیورسٹی میں ایک ہزار سے ذیادہ طلبہ وطالبات چار مختلف شعبہ جات میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں 2018 تک طلباء وطالبات کی تعداد 2000 کے قریب ہو جائے گی اور موجودہ چھے اکیڈمک بلاکس کی آپریشنل حد تک تعمیر ۳۰ جون ۲۰۱۷ تک ممکن بنانے کی کوشش جاری ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...