شانگلہ میں اساتذہ کی بھرتیوں میں کرپشن کا انکشاف

شانگلہ میں اساتذہ کی بھرتیوں میں کرپشن کا انکشاف

پورن (نامہ نگار) شانگلہ میں اساتذہ کے بھر تیوں میں خرد برد ،ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر نے ہائی کورٹ کی حکم دھجیاں اڑادیں،میرٹ کے خلاف بھرتیوں کا نوٹس لیا جائے تفصیلات کے مطابق محکمہ تعلیم ضلع شانگلہ میں TTپوسٹ کیلئے ساتھ اسامیوں کیلئے NTSٹسٹ لیا گیا تھا امیدواروں کی ناموں کا ختمی فیصلہ آئندہ ہفتے متوقع تھا لیکن اس پر امیدوار رشیدعلی کے طرف سے تحفظات تھے جس کو دور کرنے کیلئے انہوں نے ہائی کورٹ سے رجوع کیا اس پر عدالت نے 5/4/2017کو حکم امتناعی جاری کیا انہوں نے کہا کہ میں نے جب حکم کی کاپی لیکر DEOکے پاس پہنچا تو اس نے دغلا معیار اپناتے ہوئے حکم کی کافی لینے سے انکار کیا اور امیدوار کو اگلے دن جمع کرنے کی ہدایت کی جب امیدوار اگلے دن پہنچا تو معلوم ہوا کہ صاحب موصوف نے کل رات اپوائینٹمنٹ ارڈر جاری کرکے اپنی مرضی کے لوگوں کو بھرتی کیا ہے عدالت کے حکم سے نمٹنے کیلئے اس نے کل رات جاری شدہ اپوائینٹمنٹ ارڈر کو پرانا تاریخ 4/4/2017 ڈال دی اور اس کو بمورخہ6/4/2017 نوٹس بورڈ پر چسپا کیا انہوں نے مذید کہا کہ مجھے انتہائی افسوس کے ساتھ کہنا پڑتاہے کہ صوبے میں تبدیلی کے دعویداروں نے میرٹ پر بھرتی کے بلندوبانگ دعوے کئے تھے لیکن اس پر ابھی تک عمل نہیں کیا اور ماضی کی طرح اب بھی غریب لوگوں کو اپنے حق کے حصول کیلئے در در کی ٹھوکریں کھانی پڑتی ہے انہوں نے کہا کہ ضلع شانگلہ میں میرٹ کے خلاف بھرتیوں کا صوبائی حکومت فوری نوٹس لیں ۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...