شامی صدر بشار الاسد کے رویے کو کئی بار تبدیل کرنے کی کوشش کی ، حملہ امریکی مفاد کے پیش نظر کیا : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ

شامی صدر بشار الاسد کے رویے کو کئی بار تبدیل کرنے کی کوشش کی ، حملہ امریکی ...
شامی صدر بشار الاسد کے رویے کو کئی بار تبدیل کرنے کی کوشش کی ، حملہ امریکی مفاد کے پیش نظر کیا : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ

  


واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن ) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ بشارالاسد کی حکومت کے ہولناک اقدامات کو برداشت نہیں کیا جاسکتا،شام میں کیمیائی ہتھیاروں کا حملہ ''نسل انسانی کی توہین کے مترادف ہے۔امریکا اپنے اتحادیوں کے ساتھ کھڑا ہے اور دنیا بھر میں ہونے والے ایسے حملوں کی مذمت کرتا رہے گا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق رات گئے شامی ایئر بیس پر میزائل حملوں کے بعد وائٹ ہاﺅس میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انکا کہناتھا کہ شامی صدر بشار الاسد کے رویے کو کئی بار تبدیل کرنے کی کوشش کی لیکن انہوں نے اپنے لوگوں پر کیمیائی ہتھیاروں سے حملہ کیا جو ناقابل قبول ہے۔

امریکا کا بڑے اسلامی ملک پر میزائلوں سے حملہ ، تفصیلی خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں

ان کا کہنا تھا کہ شام میں حملہ امریکی مفاد کے پیش نظر کیا گیا اور صرف ٹارگٹیڈ فوجی کارروائی کا حکم دیا، شام میں جاری خانہ جنگی کے حوالے سے تمام مہذب ممالک سے بات چیت بھی کی گئی لیکن شام نے سلامتی کونسل کے احکامات کو بھی نظر انداز کیا۔

امریکی صدرکا کہنا تھا کہ ادلب میں ہونے والے کیمیائی حملے میں 70 کے قریب افراد ہلاک ہوئے جن میں سے اکثریت بچوں کی تھی اور ایسا ہونا ’تمام حدود کی پامالی ہے۔”حملے کی تفصیلات نے بہت متاثر کیا“ کیونکہ گذشتہ روز شام کے معصوم لوگوں کے خلاف کیا جانے والا حملہ انتہائی خطرناک تھا جس میں خواتین اور انتہائی معصوم چھوٹے بچے مارے گئے، ان کی ہلاکت انسانیت کی توہین ہے۔دوسری جانب امریکی وزیرِ خارجہ ریکس ٹیلرسن کاکہنا تھا کہ شام کے مستقبل میں بشار الاسد کی کوئی جگہ نہیں ہے۔

مزید : بین الاقوامی /اہم خبریں


loading...